وثوق سے نہيں کہا جاسکتا کہ کتنے افراد زندہ ہونگے، ترجمان پاک فوج

Posted: 09/04/2012 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir

راولپنڈي … ترجمان پاک فوج ميجر جنرل اطہر عباس نے کہا ہے کہ سياچن حادثہ ايک غير معمولي واقعہ ہے، وثوق سے نہيں کہا جاسکتا کتنے افراد نيچے زندہ ہوں گے، دوست ممالک سے تيکنيکي معاونت لينے کي کوشش کررہے ہيں، پوري قوم ملبے تلے دبے فوجي اہلکاروں اور شہريوں کيلئے دعا کرے. ترجمان پاک فوج نے جيو نيوز کے پروگرام ليکن ميں ثناء بچہ سے گفتگر کرتے ہوئے کہا کہ ايک کمانڈنگ آفيسر سميت ديگر اہل کار برفاني تودے ميں دبے ہوئے ہيں جن ميں سے 70 سے 80 فيصد کا تعلق شمالي علاقہ جات سے ہے، امدادي کارروائياں جاري ہيں، پاک فوج کے انجنئيرز بھي امدادي کاموں ميں مصروف ہيں. ميجر جنرل اطہر عباس نے ايک سوال کے جواب ميں بتايا کہ دوست ممالک سے تکنيکي معاونت لينے کي کوشش کر رہے ہيں تاہم حکومت فيصلہ کرے گي کہ کس ملک سے مدد ليني ہے. انہوں نے کہا کہ سياچن ميں برفاني تودے معمول کي بات ہے ليکن اس نوعيت کا واقعہ پہلے کبھي نہيں ہوا سياچن حادثہ ايک غير معمولي واقعہ ہے، وثوق سے نہيں کہا جاسکتا کہ کتنے افراد ملبے کے نيچے زندہ ہوں گے. ترجمان پاک فوج کا کہنا ہے کہ کوشش پوري کررہے ہيں، اہل کاروں کو زندہ نکالا جاسکے، پوري قوم پاک فوج کے اہل کاروں کيلئے دعا کرے

Comments are closed.