بھارتی آرمی چیف ذہنی توازن کھو چکے ہیں، مشرا

Posted: 02/04/2012 in Afghanistan & India, All News, Important News

نئی دہلی: بھارتی قومی سلامتی کے سابق مشیر برجیش مشرا نے کہا ہے کہ بھارتی آرمی چیف جنرل وی کے سنگھ اپنا ذہنی تواز ن کھو چکے ہیں اور انہیں ریٹائرمنٹ تک جبری رخصت پر بھیج دینا چاہیے۔ برجیش مشرا سابق وزیر اعظم اٹل بہاری واجپائی کے دور حکومت میں بھارتی قومی سلامتی کے مشیر تھے۔ آرمی چیف کے حالیہ تنازع پر ایک نجی ٹی وی کو انٹرویو میں برجیش مشرا نے کہا کہ جنرل وی کے سنگھ اب تک کے سب سے برے آرمی چیف ہیں، جس طرح کا  رویہ انھوں نے رکھا وہ کوئی آرمی چیف نہیں رکھ سکتا۔ انھوں نے حکومت کو مشورہ دیا کہ اگر جنرل وی کے سنگھ کو برخاست نہیں کیا جاتا ہے تو اس سے دیگر مسائل پیدا ہوسکتے ہیں، اس لیے انہیں اکتیس مئی تک جبری رخصت پر بھیج دینا چاہیے۔ جنرل وی کے سنگھ اکتیس مئی کو ریٹائرڈ ہو رہے ہیں۔ جنرل وی کے سنگھ کے فوجی گاڑیاں کلیر کرنے پر چودہ کروڑ روپے کی رشوت کی پیشکش کے انکشاف اور وزیراعظم کو دفاعی سازو سامان کی کمی سے متعلق لکھے گئے خط نے بھارت میں ہلچل مچادی تھی جس میں انہوں نے فوج کے پاس ہتھیاروں اور ساز و سامان کی کمی کے بارے میں آگاہ کیا تھا۔ مسٹر سنگھ کا کہنا ہے کہ خط افشا کرنے میں ان کا ہاتھ نہیں ہے اور اس طرح کے خط کو ظاہر کرنا ملک کے ساتھ بغاوت کے مترادف ہے۔ تاہم برجیش مشرا نے کا کہنا ہے کہ وزیراعظم ایسی حساس نوعیت کی دستاویزات افشا نہیں کر سکتے اور نہ ہی ان کے دفتر کا کوئی افسر ایسا کرنے کی جرات کر سکتا ہے۔ اس لیے اگر خود جنرل وی کے سنگھ نے ایسا نہیں کیا تو پھر ان کے کسی دوست نے ایسا کیا ہوگا۔ چند روز پہلے ہی فوج کے سربراہ نے یہ الزام بھی عائد کیا تھا کہ انہیں ہتھیاروں کے سودے بازی میں چودہ کروڑ روپے کی رشوت کی پیشکش کی گئی تھی۔ اس کی تصدیق وزیر دفاع اے کے انتھونی نے بھی کی تھی لیکن بعض وجوہات کی بنا پر کارروائی نہیں کی گئی۔ اس پر برجیش مشرا نے کہا کہ کارروائی نہ کرنے کے لیے وزیر دفاع اور فوج کے سربراہ دونوں ذمہ دار ہیں۔

Comments are closed.