گلگت: رحمان ملک کی درخواست، آغا راحت نے ایک دن کی مہلت دے دی

Posted: 09/03/2012 in All News, Breaking News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

سانحہ کوہستان کے بعد آغا راحت حسینی کی جانب سے دی جانے والی ڈیڈ لائن کے آخری دن آج مرکزی انجمن امامیہ کا اجلاس گلگت میں آغا راحت حسینی کی صدارت میں ختم ہوگیا۔ اطلاعات کے مطابق اجلاس میں ڈیڈ لائن کے ختم ہونے کے بعد لا ئحہ عمل طے کیا گیا جس کا اعلان آج بعد نماز ظہر کیا جانا تھا۔  دوران اجلاس وزیر داخلہ رحمان ملک نے آغا راحت حسینی سے ٹیلی فون پر بات چیت کی اور ایک دن کی مہلت مانگی جس پر متفقہ طور پر حکومت کو مزید ایک دن کی مہلت دے دی گئی ہے۔ نمائندے کی اطلاعات کےمطابق سانحہ کوہستان کے بعد سے گلگت بلتستان میں تا حال کشیدگی برقرار ہے ۔ نمائندے نے مزید بتایا کے کل تک کی مہلت ملنے کے بعد حکومت کی طرف سے عملی اقدام کا انتظار کیا جائے گا اور پھر آئندہ کے لائحہ عمل کا عوام کے سامنے کل اعلان کیا جائے گا۔ نمائندے کیمطابق اس بات کا بھی امکان ہے کہ اگر حکومت کی طرف سے مطالبات پر اقدامات نہ کئے گئے تو کل گلگت میں سول نافرمانی کی تحریک کا اعلان کر دیا جائے۔ آغا راحت حسین الحسینی کی صدارت میں علما و عمائدین گلگت و بلتستان کا بند کمرہ اجلاس اختتام پذیر هو چکا هے ، دوران اجلاس رحمان ملک وفاقی وزیر داخلہ نے ٹیلی فونک رابطہ کے ذریعے وفد سے مذاکرات کرتے هوئے کها که سانحہ کوہستان کے قاتلوں کا سراغ لگا لیا گیا ہے آج موسم کی خرابی کی وجہ سے گلگت نہیں پہنچ سکتا کل آکر آپ سے ملاقات کرکے اعلان کرونگا، آپکے تمام مطالبات پر عمل درآمد ہوگا، بعد از آن ملت جعفریہ گلگت بلتستان کی ۸ رکنی ’’مشترکہ سپریم کونسل‘‘ کی تشکیل کا اعلان کیا گیا هے ، علامہ شیخ حسن جعفری امام جمعہ و الجماعت اسکردو اور علامہ سید راحت حسین الحسینی امام جمعہ والجماعت گلگت کی سرپرستی ہوگی ۔جبکه کل تک کی مہلت کا اعلان کیا گیا هے ، تمام نوجوانوں کو مرکز سے مربوط رہنے کی ہدایت دیتے ہیں واضح رہے کہ سانحہ کوہستان میں گلگت جانے والی بس کو روک کر سفاک دہشت گردوں نے مومن مسافروں کو نیچے اتار کر شہید کردیا تھا جن کی تعداد ۱۸ تھی۔

Comments are closed.