شام کے نائب وزیر تیل نے حکومت کا ساتھ چھوڑ دیا

Posted: 08/03/2012 in All News, Breaking News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria

شام کے نائب وزیر تیل عبدحسام الدین نے حکومت سے علیحٰدہ ہوتے ہوئے باغیوں کے ساتھ شامل ہونے کا اعلان کیا ہے۔ انہوں نے یہ بیان ویڈیو شیئرنگ ویب سائٹ یوٹیوب پر جاری کیا ہے۔عبدحسام الدین شام میں گزشتہ برس سے جاری شورش کے بعد بشار الاسد کا ساتھ چھوڑنے والے پہلے اعلیٰ عہدے دار بن گئے ہیں۔ ان کے اس بیان پر مبنی ویڈیو یو ٹیوب پر بدھ کو اپ لوڈ کی گئی ہے، جسے جمعرات کو دیکھا گیا ہے۔ اس میں ان کا کہنا ہے: ’’میں عبد حسام الدین، نائب وزیر تیل اور معدنی دولت حکومت سے علیحٰدگی، استعفے اور بعث پارٹی چھوڑنے کا اعلان کرتا ہوں۔‘‘ انہوں نے حکام سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا: ’’جنہیں تم اپنے لوگ کہتے ہو، تم ان پر مسلط ہو گئے ہو۔ دکھ سے بھرے ایک پورے سال سے تم نے ان پر زندگی تنگ کر رکھی ہے اور شام کو پاتال کی تہہ تک لے جا رہے ہو۔‘‘ دوسری جانب اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ شام میں حمص کا ضلع بابا عمرو ویران ہو گیا ہے۔ حکومت مخالفین کا مؤقف ہے کہ دمشق انتظامیہ زیادتیوں کے ثبوت چھپانے کی کوشش کر رہی ہے۔ اقوام متحدہ کی سربراہ برائے انسانی ب‍حران ویلاری آموس نے بدھ کو حمص کے ضلع بابا عمرو کا دورہ کیا۔ انہوں نے اس ضلع کو ویران پایا ہے اور وہاں سے زیادہ تر شہری نقل مکانی کر چکے ہیں۔ حمص کے اس علاقے کو تقریباﹰ ایک ماہ تک شام کی سکیورٹی فورسز کی جانب سے بدترین کریک ڈاؤن کا سامنا رہا، جس پر عالمی برادری کی جانب سے مذمتی بیانات بھی سامنے آئے۔ ویلاری آموس اس عرصے میں وہاں پہنچنے والی پہلی غیرجانبدار مبصر ہیں۔ حکومتی فورسز نے یکم مارچ کو اس علاقے کا کنٹرول واپس حاصل کیا ہے اور اس وقت سے اس کے داخلی راستے بند کر رکھے تھے۔ اب امریکی فوج کے سربراہ جنرل مارٹن ڈیمپسی نے بدھ کو ایک بیان میں کہا کہ صدر باراک اوباما نے محکمہ دفاع کو شام کے حوالے سے عسکری کارروائی کے امکانات کے ابتدائی جائزے کے لیے کہا ہے۔ خبر رساں ادارے اے پی کے مطابق امریکی صدر باراک اوباما اور سیکرٹری دفاع لیون پنیٹا کا تاحال یہ خیال ہے کہ اقتصادی پابندیاں اور دمشق کو بین الاقوامی سطح پر تنہا کر دینا بشار الاسد کو اقتدار چھوڑنے پر مجبور کرنے کا بہترین طریقہ ہے۔

Comments are closed.