عالمی امن کے لئے حقیقی خطرہ ایران یا امریکہ؟ اعداد و شمار پر مبنی رپورٹ

Posted: 07/03/2012 in All News, Breaking News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Survey / Research / Science News, USA & Europe

امریکہ کے ساتھ 8500 ایٹمی ہتھیار ہیں جب کہ ایران کے ساتھ کوئی ایٹمی ہتھیار نہیں۔ اسی طرح دوسرے موا زنے کی لائن میں کہا گیا ہے کہ امریکہ نے اب تک دو ممالک میں سویلین یا عام شہریوں پر ایٹم بم بھی برسائے ہیں، جب کہ ایران نے ایسا کچھ نہیں کیا۔عالمی میڈیا میں ایران پر ممکنہ امریکی و اسرائیلی جارحیت کے حوالے سے مختلف سماجی ویب سائٹس پر حال ہی میں اعداد و شمار پر مبنی ایک تصویری رپورٹ نے بہت مقبولیت حاصل کی ہے، جس میں دنیا کے امن کو حقیقی خطرہ کے عنوان سے اب تک دونوں ملکوں کے اعداد و شمار کا موازنہ کیا گیا ہے۔ ان اعداد و شمار میں بیان ہو ا ہے کہ امریکہ کے پاس 8500 ایٹمی ہتھیار ہیں جب کہ ایران کے پاس کوئی ایٹمی ہتھیار نہیں۔ اسی طرح  دوسرے موازنے کی لائن میں کہا گیا ہے کہ امریکہ نے اب تک دو ممالک میں سویلین یا عام شہریوں پر ایٹم بم بھی برسائے ہیں، جب کہ ایران نے ایسا کچھ نہیں کیا۔ موازنے کی تیسری لائن میں کہا گیا ہے کہ سال 2010ء کے دوران امریکا کا جنگی و دفاعی بجٹ 687 بلین امریکی ڈالر تھا، جب کہ ایران کا دفاعی بجٹ صرف 7 بلین امریکی ڈالرز ہے۔ اسی طرح موازنے کی چوتھی لائن میں کہا گیا ہے کہ امریکہ نے اب تک 16 ممالک پر چڑھائی و جارحیت کرکے حملے اور قبضہ تک کیا ہے  لیکن ایران نے ایسا کچھ نہیں کیا۔ موازنے کی آخری اور پانچویں لائن میں کہا گیا ہے کہ امریکہ اب بھی دیگر ممالک کے اندرونی معاملات میں دخل اندازی اور عالمی تنظیموں کے ذریعے پابندیاں لگانے میں مصروف ہے، جبکہ ایران اس حوالے سے دیگر ممالک پر پابندیاں و دخل انداز ی تو دور کی بات خود ہی پابندیوں کا شکار ہو چکا ہے۔ یاد رہے کہ مختلف سماجی وییب سائٹس پر اس سروے کو بھرپور پذیرائی مل رہی ہے۔

Comments are closed.