کانگو ، اسلحہ ڈپو میں دھماکے ، 206افراد ہلاک ،سینکڑوں زخمی

Posted: 06/03/2012 in African Region, Breaking News, Survey / Research / Science News

اسلام آباد:  افریقی ملک کانگو کے دارالحکومت برازاویل میں اسلحے کے ایک ڈپو میں ہونے والے زوردار دھماکوں کے باعث کم سے کم 206 افراد ہلاک اور سینکڑوں زخمی ہو گئے ہیں۔دھماکے اس قدر زور دار تھے کے ان کی آواز میلوں دور سرحد کے پار جمہوریہ کانگو کے دارلحکومت کنشا سا میں بھی سنی گئی۔برازاویل میں ایک یورپی سفیر نے خبر رساں ادارے اے ایف پی کو بتایا ہم نے فوجی ہسپتالوں میں کم سے کم 200لاشوں کو گنا ہے اور پندرہ سو کے قریب افراد زخمی ہیں جن میں سے کئی کی حالت تشویش ناک ہے۔صدر کے دفتر کے ایک اہلکار نے ہلاک ہونے والوں کی تعداد دو سو کے قریب بتائی ہے جبکہ فرانسیسی سفارت خانے کے ایک ڈاکٹر کے مطابق پانچ سو کے لگ بھگ افراد زخمی ہیں۔کانگو کے حکومتی ریڈیو پر وزیرِ دفاع چارلس زاچری بووا کا کہنا تھا کہ دارلحکومت میں دھماکے اسلحے کے ایک ڈھیر میں آگ لگنے کی وجہ سے ہوئے۔ انہوں نے شہریوں سے اطمینان رکھنے کو کہا۔ان کا کہنا تھا آپ نے جو دھماکے سنے ہیں ان کا یہ مطلب نہیں ہے کہ ملک میں مارشل لاء لگا ہے یا جنگ چھڑ گئی ہے۔ نہ ہی کوئی بغاوت شروع ہو گئی ہے بلکہ یہ ایک اسلحے کے ڈھیر میں آگ لگنے کے باعث دھماکے ہونے کا واقعہ ہے۔عینی شاہدین کا کہنا ہے کہ فوجیوں اور پولیس نے جائے حادثہ کی ناکہ بندی کی دی ہے۔اگرچہ ماضی میں کانگو کو مارشل لاء اور خانہ جنگی کا سامنا رہا ہے لیکن انیس سو نوے کی دہائی کے بعد سے کانگو میں زیادہ تر امن ہی رہا ہے۔

Comments are closed.