منصور اعجاز کا پاکستاني اعلي? سياسي،عسکري شخصيات سے تعلق کا اعتراف

Posted: 22/02/2012 in All News, Breaking News, Local News, Pakistan & Kashmir

ميموگيٹ اسکينڈل کے تحقيقاتي کميشن کا اجلاس اسلام آباد ہائي کورٹ جسٹس فائز قاضي عيسي? کي زير صدارت جاري ہے جبکہ دوسري جانب لندن ميں پاکستاني ہائي کميشن ميں اسکينڈل کے مرکزي کردار منصور اعجاز وڈيو لنک کے ذريعے اپنا بيان ريکارڈ کرا رہے ہيں جس کے دوران انہوں نے پاکستاني کے سياسي اور عسکري رہنماو?ں سے تعلقات کا اعتراف کيا. اپنے بيان ميں منصور اعجاز نے کہا کہ تمام باتيں تحريري طور پر دے دي ہيں جو صحيح ہيں. انہوں نے کہا کہ 2003 ميں آئي ايس آئي کے سابق سربراہ جنرل احسان الحق سے برسلزميں ملاقات ہوئي جبکہ جنرل پرويزمشرف سے2005يا2006ميں لندن ميں ملاقات ہوئي تھي. انہوں نے مزيد کہا کہ پاکستاني حکام کي ساتھ ميرے تعلقات کم ہوگئے ہيں. انہوں نے کہا کہ ان کي صدر آصف زرداري سے آخري ملاقات2009ميں ہوئي تھي. اس سے قبل حسين حقاني کے وکيل زاہدبخاري کي جانب سے بارباراعتراض اٹھانے پرکميشن نے برہمي کا اظہار کيا. زاہد بخاري کاکہنا تھا کہ منصوراعجاز کے تحريري بيان کوزباني بھي ريکارڈ کياجائے. کميشن کے سربراہ جسٹس قاضي فائزعيسي? کا کہنا تھا کہ آپ بارباراعتراضات کرکے عدالت کي معاونت نہيں کررہے.

Comments are closed.