ايران نے معائنہ کاروں کو اہم فوجي اڈے کے معائنہ سے روکديا

Posted: 22/02/2012 in All News, Breaking News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria

اقوامِ متحدہ کے جوہري توانائي کے عالمي ادارے(آئي اے اي اے) نے کہا ہے کہ ايراني حکام نے انسپکٹروں کي ايک ٹيم کو تہران کے قريب ايک اہم فوجي اڈے کا معائنہ کرنے سے روک ديا ہے.برطانوي خبر رساں ادارے کے مطابق جوہري توانائي کے ادارے آئي اے اي اے نے کہا کہ جنوبي تہران ميں واقع پارچن ميں تمام کوششوں کے باوجود اس اڈے کے معائنے پر کوئي سمجھوتہ نہيں ہوسکا ہے.جوہري توانائي کے ادارے کے انسپکٹرز ايران ميں موجود ہيں. انہوں نے کہا ہے کہ وہ تصديق کرنا چاہتے ہيں کہ آيا يہ فوجي اڈہ ايراني جوہري پروگرام کے تناظر ميں استعمال کيا جارہا ہے.ادارے کے ايک اہلکار نے کہا کہ ايراني حکام سے دو روز تک تہران سے تيس کلوميٹر دور پارچن کے فوجي اڈے تک رسائي کا مطالبہ کيا گيا ليکن ايراني حکام نے اس کي اجازت نہيں دي ہے جس کے بعد اب يہ ٹيم ايران سے واپس جارہي ہے.آئي اے اي کے ڈائريکٹر يوکيو امانو نے ايراني جوہري تنصيبات کے معائنے کي اجازت نہ ملنے پر مايوسي کا اظہار کياہے.ادھر ايراني وزارت خارجہ نے کہا کہ آئي اے اي اے کي ٹيم کے پاس معائنے کا مينڈيٹ نہيں ہے. اس سے پہلے ايراني وزارت خارجہ کي جانب سے جاري بيان ميں کہاگيا تھاکہ ايران کي موجودہ ٹيم کو معائنے کا مينڈيٹ حاصل نہيں، ٹيم ارکان سے صرف مذاکرات کئے جائيں گے. واضح رہے کہ ايران کا اصرار ہے کہ اس کا جوہري پروگرام پرامن مقاصد کے ليے ہے، تاہم مغرب کو شبہ ہے کہ وہ اسے ہتھيار بنانے کے ليے استعمال کرنا چاہتا ہے.

Comments are closed.