افغانستان میں نیٹو افواج نے قران پاک کی بے حرمتی

Posted: 22/02/2012 in Afghanistan & India, All News, Breaking News, Important News, Religious / Celebrating News, Saudi Arab, Bahrain & Middle East

کابل: افغانستان میں اتحادی افواج کی جانب سے قرآن پاک کے نسخے نذر آتش کرنے کی ناپاک جسارت کیخلاف امریکی فوجی اڈے کے باہر زبردست احتجاج کیا گیا ہے جبکہ نیٹو نے معاملے کی مکمل تحقیقات کا حکم جاری کرتے ہوئے معافی مانگ لی ہے۔ غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق افغان پولیس نے بتایا ہے کہ منگل کو کابل کے نزدیک بگرام امریکی فوجی اڈے کے باہر ہزاروں کی تعداد میں افغان شہری جمع ہوگئے جنہوں نے فوجی اڈے کو گھیرے میں لے لیا اور پٹرول بم داغے جس کے نتیجے میں داخلی دروازے پر آگ بھڑک اٹھی مظاہرین اتحادی افواج کے ہاتھوں قرآن پاک کے نسخے نذر آتش کرنے کیخلاف سخت احتجاج  کر رہے تھے اور نعرے بازی کر رہے تھے۔ ایک مقامی پولیس اہلکار کے مطابق دو ہزار سے زائد افراد نے مظاہرے میں شرکت کی۔ افغان وزارت داخلہ کے ترجمان صدیق صدیقی نے بھی مظاہرے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ اضافی نفری علاقے میں ممکنہ پرتشدد واقعات سے نمٹنے کیلئے اضافی نفری بھجوادی گئی ہے جو کہ کابل سے تقریباً ساٹھ کلو میٹر دور واقع ہے۔ ادھر جلال آباد روڈ پر ضلع پل چرخی میں واقع بڑے نیٹو فوجی اڈے کے نزدیک بھی  پانچ سو کے قریب افراد کا ایک ہجوم نکل آیا اور واقعہ کی مذمت اور نعرے بازی کی۔ پولیس ترجمان اشمت استاتکزئی کے مطابق مظاہرین کنٹرول میں ہیں اور تشدد کا کوئی واقعہ سامنے نہیں آیا ہے۔ ماضی میں بھی افغانستان میں اس قسم کے مظاہرے رونما ہوچکے ہیں گزشتہ سال اپریل میں ایک امریکی پادری سے فلوریڈا میں قرآن پاک کے نسخے نذر آتش کرنے کیخلاف پرتشدد مظاہروں کے دوران اٹھارہ افراد ہلاک ہوگئے تھے۔ دوسری جانب نیٹو نے اس واقعہ پر معافی مانگ لی ہے۔ نیٹو افغانستان میں نیٹو کے امریکی کمانڈر جنرل جان ایلن نے ایک بیان میں کہا ہے کہ انہوں نے واقعہ کی مکمل تحقیقات کا حکم  دیدیا ہے۔ ان کا کہنا  تھا کہ جب بھی ہم اس قسم کی کارروائیوں کا سنیں گے تو ہم اس کیخلاف فوری کارروائی کرینگے۔ انہوں نے ان رپورٹس کی جامع تحقیقات کرائی جائیں گی کہ آیا بگرام ائر بیس پر فوجیوں نے ایسی کوئی حرکت کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایسی کسی بھی کارروائی پر میں افغان صدر اور افغان حکومت اور سب سے اہم افغان عوام سے معافی مانگتا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اس بات کو یقینی بنایا جائے تاکہ مستقبل میں ایسے واقعات دوبارہ رونما نہ ہوں مجھے یقین ہے کہ ایسا جان بوجھ کر نہیں کیا گیا ہوگا۔

Comments are closed.