ایران سے دوستی کی سزا، پاکستان کے خلاف امريکي ايوان نمائندگان میں بلوچستان کو حق خود اراديت سے متعلق قرار داد پيش

Posted: 18/02/2012 in All News, Breaking News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Local News, Pakistan & Kashmir, USA & Europe

 امريکي ايوان نمائندگان ميں بلوچستان کو حق خود اراديت سے متعلق قرار داد پيش کردي گئي ہے، جس ميں کہا گيا ہے کہ بلوچ عوام کو اپنے لئے آزاد ملک کا حق حاصل ہے. امريکي ايوان نمائندگان ميں رکن کانگريس ڈينا روہرا باکر نے بلوچستان کو حق خود اراديت سے متعلق قرار داد پيش کي ہے. قرار داد کے متن ميں کہا گيا ہے کہ بلوچ عوام کو اپنے لئے آزاد ملک کا حق حاصل ہے، بلوچوں کو پاکستان ميں سياسي اور نسلي امتياز کا سامنا ہے اور انہيں ماورائے عدالت قتل کيا جارہا ہے. قرار داد ميں مزيد کہا گيا ہے کہ بلوچستان اس وقت ايران، افغانستان اور پاکستان ميں تقسيم ہے. قرار داد ميں مو?قف اختيار کيا گيا ہے کہ پاکستان ميں بلوچ عوام پر ظلم کيا جارہا ہے اور امريکا بلوچ عوام پر ظلم کرنے والوں کو ہي اسلحہ اور امداد فراہم کررہا ہے.امریکی ایوان نمائدگان کے اس اقدام سے مکمل طور پر اس بات کی تصدیق ہوتی ہے کہ پاکستان کے ہر شہر اور علاقہ میں ہونے والے بم دھاکوں، ٹارگیٹ کلنگ اور دہشت گردی سمیت تمام ملک دشمن کاروائیوں میں امریکہ ایجنٹ اور امریکی مفاد پرست عناصر خواہ وہ سیاسی شخصیات ہوں یا دیگر شعبہ زندگی سے وابستہ عناصر ہوں جو کہ امریکی حمایت یافتہ ہیں بھر پور طریقے سے شامل ہیں، امریکی ایوان نمائندگاں کا یہ اقدام جو کہ برادر ملک اسلامی جموریہ ایران کے صدر ڈاکٹر احمدی نژاد کے دورئے پاکستان کے موقع پر کرنا بظاہر یہ ظاہر کرتا ہے کہ پاکستان کو ایران سے دوستی کرنے کی سزا دی جائے۔ اس مرحلے پر سیاسی بصیرت کا مظاہرا کرتے ہوئے ملک کے ذمہ دار  اداروں کو امریکی مفادات سے کنارہ کشی اختیار کرنا چاہیے کیونکہ پاکستان ہے تو ہم ہیں ورنا کچھ بھی نہیں، امریکا کا یہ اقدام پاکستان دشمنی کے مترادف ہے اس پر امریکی سفیر کو ملک سے نکال دینا چاہیے

Comments are closed.