Archive for 18/02/2012

رپورٹ کے مطابق آستانۂ مقدسہ کریمۂ اہل بیت سیدہ فاطمہ معصومہ کے حرم مطہر میں بحرین کے انقلاب کرامت کی پہلی تقریب کا اہتمام کیا جس میں قم کے مراجع تقلید و علمائے اعلام سمیت بحرین کے علماء و فضلاء اور پاکستانی علماء و فضلاء اور عوام کی ایک کثیر تعداد نے شرکت کی اور پاکستان میں نمائندہ ولی فقیہ، عالمی اہل بیت (ع) کی شورائے عالی کے رکن اور تحریک اسلامی پاکستان کے سربراہ “حجت الاسلام والمسلمین علامہ سید ساجد علی نقوی” نے بھی پاکستانی فضلاء اور علماء کے ایک وفد کے ہمراہ شرکت کی۔ تقریب میں شرکت کرنے والی مذہبی اور علمی شخصیات میں مراجع تقلید “آیت اللہ العظمی حسین نوری ہمدانی” اور “آیت اللہ العظمی سید محمد علی علوی گرگانی”، اور علمائے اعلام میں آیت الله العظمی امام سید علی خامنہ ای کے نمائندے “آیت اللہ رضا استادی”، آیت اللہ العظمی شیخ لطف اللہ گلپائگانی کے نمائندے “حجت الاسلام و المسلمین شیخ علی صافی گلپایگانی”، آیت الله العظمی سید کاظم حائری کے نمائندے “حجت الاسلام والمسلمین طبیب‏زاده”، آیت اللہ العظمی مکارم ناصر مکارم شیرازی کے دو نمائندے نیز اساتذہ حوزہ علمیہ قم “آیت اللہ خرازی”، آیت اللہ علوی بروجردی”، “آیت اللہ نصر اللہ شاہ آبادی”، “آیت اللہ ہادوی تہرانی”، “آیت اللہ جواد فاضل لنکرانی”، آستانہ مقدسہ حضرت سیدہ معصومہ سلام اللہ علیہا کے متولی اور قم کے امام جمعہ “حجت الاسلام والمسلمین سعیدی”، حوزات علمیہ کے سربراہ آیت آللہ شیخ مرتضی مقتدائی کے نمائندے “حجت الاسلام والمسلمین بحرانی” اور قم سے اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمان کے نمائندے “حجت الاسلام والمسلمین بنایی قمی” اور “حجت الاسلام والمسلمین آشتیانی” شامل تھے۔ تقریب کے مقرر اسمبلی کی شورائے عالی کے رکن اور شہر اراک کے امام جمعہ “آیت اللہ شیخ قربان علی دُرّی نجف آبادی” تھے۔ تقریب کے بین الاقوامی شرکاء میں حجت الاسلام والمسلمین علامہ سید ساجد علی نقوی سمیت بحرین کی جمعیۃالعمل الاسلامی کے رکن “ڈاکٹر راشد الراشد”، سعودی عرب کے عالم دین “حجت الاسلام والمسلمین البغشی” پاکستان کے صوبے بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ کے امام جمعہ “حجت الاسلام والمسلمین سید محمدہاشم موسوی” اور برازیل کے شیعہ مرکز کے سربراہ “حجت الاسلام والمسلمین شیخ طالب خزرجی” شام تھے۔ علاوہ ازیں بحرین، یمن، سعودی عرب، پاکستان اور افغانستان سمیت کئی ممالک کے طلاب و فضلاء نے بھی اس تقریب میں بھرپور شرکت کی۔

Advertisements

ہندوستان کی ایک تیل کمپنی نے اعلان کیا ہے کہ وہ ایران سے تیل خریدتی رہے گي۔ایسار آئيل کمپنی کے ایگزیکیٹوی ڈائرکٹر للت کمار گپتا نے کہا کہ ان کی کمپنی بدستور اسلامی جمہوریہ ایران سے تیل خریدتی رہے گي۔ للت کمار گپتا کے مطابق ایران سے خریدا ہوا تیل گجرات میں واقع ایسار آئيل کی ریفائنری کی ضرورتیں پوری کرنے کےلئے نہایت ضروری ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے ایران کے ساتھ تیل خریدنے کا معاہدہ کیا ہے اور دوہزار تیرہ تک ایران سے تیل خریدتے رہیں گے

امریکی ڈرون طیارون نے شام کی فضائي حدود کی خلاف ورزی کرتےہوئے شام کی فضاؤں میں پروازیں انجام دی ہیں۔فلسطینی پریس نے امریکی چینل این بی سی کےحوالے سے رپورٹ دی ہے کہ امریکی ڈرون طیاروں نے شام کی فضا میں پرواز کی ہے۔ این بی سی نے امریکی وزارت جنگ پنٹاگون کے حکام کے حوالے سے رپورٹ دی ہے کہ ڈرون طیاروں کی پروازوں کا مقصد شام پر فوجی حملوں کی ابتدا کرنا نہيں تھا بلکہ اس کے دعوے کے مطابق حکومت کے مسلح مخالفین کے خلاف شام کی فوجی کاروائيوں کی معلومات حاصل کرنا تھا۔ ادھر اوباما کے قومی سلامتی کے مشیر ٹام ڈینیلن شام اور ایران کے بارے میں صیہونی حکام سے گفتگو کرنے کے لئے مقبوضہ فلسطین گئے ہیں۔ یاد رہے شام میں امریکہ اور اسکے مغربی اور عرب اتحادیوں کے حمایت یافتہ دہشتگرد بدامنی پھیلارہے ہیں۔

یمن مین الحوثی تحریک نے کہا ہے کہ یمن کے شمالی صوبوں کے لئے سعودی عرب ہتھیار بھیج رہا ہے۔العالم کی رپورٹ کے مطابق الحوثی تحریک نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سعودی عرب یمن کے سلفی گروہوں کی حمایت کے لئے ٹرکوں میں ہتھیار بھر کر بھیج رہا ہے۔ الحوثی تحریک نے کہا کہ سعودی عرب شمالی یمن کے تکفیری اور سلفی دہشت گرد گروپس کی حمایت کررہا ہے اور صعدہ اور حجۃ کے صوبوں میں بڑے پیمانے پر دہشت گردی پھیلانے کے لیے امریکی و اسرائیلی ایجنڈ پر عمل کرتے ہوئ اپنی ظالمانہ حکومت کو دوام دینے کے لئے  دہشت گرد گروپس کو ہتھیار بھیجے جارہے ہیں۔ یاد رہے سعودی عرب کی ثالثی سے ہی سابق ڈکٹیٹر علی عبداللہ صالح اور ان کے ساتھیوں کو قانونی استثنی ملا ہے اور ان کے نائب عبدربہ حکومت بنانے میں کامیاب ہوئے ہیں۔یمن کے عوام کا کہنا ہےکہ علی عبداللہ صالح اور ان کی حکومت کے اراکین پر مقدمہ چلایا جائے اور قرار واقعی سزا دی جائے۔ یمن کے انقلابی عوام کا مطالبہ ہے کہ علی عبداللہ صالح اور ان کے ساتھیوں کو دیا گيا قانونی استثنی ختم کیا جائے۔جو کہ سعودی ظالم بادشاہوں کے شدید تریں دباو پر دیا گیا ہے

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر دفاع بریگيڈیر جنرل احمد وحیدی نے کہا ہے کہ وزارت دفاع، امریکہ کے جاسوس ڈرون آر کیو ایک سو ستر کو ڈی کوڈ کرنے کے وزارت سائنس و ٹکنالوجی کی پیشکش کا خیر مقدم کرتی ہے۔یاد رہےکہ اسلامی جمہوریہ ایران کی الکٹرانیک اور فضائي دفاعی ماہرین نے چار دسمبر کو مشرقی ایران میں امریکہ کے جدید ترین جاسوس طیارے آر کیو ایک سو ستر کو صحیح سالم اتار لیا تھا۔ بریگیڈیر جنرل احمد وحیدی نے کہا کہ وزارت سائنس و ٹکنالوجی کی یہ پیشکش علمی اورجہادی جذبات کی غماز ہے جو ہماری یونیورسٹیوں اور دانشوروں اور سائنس دانوں کی خصوصیت ہے۔ انہوں ایرانی ماہرین کے ہاتھوں ڈرون طیاروں کی تیاری کی طرف اشارہ کرتےہوئے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران جدید ترین ڈرون طیارے بنانے کی صلاحیت رکھتا ہےاور اس نے اپنی یہ صلاحیت ثابت کردکھائي ہے

پاکستان میں کرم ايجنسي کے علاقے پارا چنارميں جمعہ کو ہونے والے خودکش دھماکے اور فائرنگ ميں زخمي ہونيوالے مزيد 6افرادجاں بحق ہوگئے اور اس کےجاں بحق ہونيوالوں کي مجموعی تعداد 36 ہوگئي ہے پاکستان میں کرم ايجنسي کے علاقے پارا چنارميں جمعہ کو ہونے والے خودکش دھماکے اور فائرنگ ميں زخمي ہونيوالے مزيد 6افرادجاں بحق ہوگئے اور اس کےجاں بحق ہونيوالوں کي مجموعی تعداد 36 ہوگئي ہے. ذرائع کے مطابق پاراچنار ميں گزشتہ روزجمعہ کي نماز کے بعد مسجد کے باہر ہونيوالے خودکش بم دھماکہ اور بعد ازاں مشتعل مظاہرين پر پوليس کي فائرنگ سے زخمي ہونے والے مزيد 6فراد زخموں کي تاب نہ لاکر پشاور اور پاراچنارکے مختلف اسپتالوں ميں دم توڑ گئے.ذرائع کے مطابق اس وقت مختلف اسپتالوں ميں 67مريض زير علاج ہيں.طوري قبائل کے رہنما حاجي حامد طوري کے مطابق پاراچنار واقعہ کے خلاف عمائدين کا جرگہ طلب کرلياگيا ہے. جس ميں واقعہ کي ذمہ داري قبول کرنے والے شدت پسند کمانڈر کے خلاف ايف آئي آر درج کرانے سميت مختلف اقدامات اٹھانے پر غور کيا جائے گا. ذرائع کے مطابق بم دھماکہ کی ذمہ داری طالبان دہشت گردوں نے قبول کرلی ہے۔

اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون نے کہا ہے کہ ایران کے ایٹمی معاملے کا حل صرف سفارتکاری اور مذاکرات کے ذریعہ ہی ممکن ہے۔غیر ملکی ذرائع کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ اقوام متحدہ کے سکریٹری جنرل بان کی مون نے کہا ہے کہ ایران کے ایٹمی معاملے کا حل صرف سفارتکاری اور مذاکرات کے ذریعہ ہی ممکن ہے۔ بان کی مون کا کہنا ہے کہ ایران کے ایٹمی معاملے کا حل صرف مذاکرات اور سفارتکاری کے ذریعہ  ہی ممکن  ہے اس نے کہا کہ مذاکرات کے علاوہ کوئي دوسرا راستہ نہیں ہے جس کے ذریعہ ایران کے  ایٹمی معاملے کو حل کیا جاسکے۔ بان کی مون نے کہا کہ ایران نے بعض ابہمات کو ابھی دور نہیں کیا اور ان ابہامات کومذاکرات کے ذریعہ حل کیا جاسکتا ہے۔

قاہرہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مفادات کےنگراں دفتر کے سربراہ نے مصری اخبار کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے امریکی امداد کو مصر کے مضر اورنقصان دہ قرار دیتے ہوئےکہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران ہنگامی بنیاد پر مصر کا تعاون کرنے کے لئے آمادہ ہے۔ رپورٹ کے مطابق قاہرہ میں اسلامی جمہوریہ ایران کے مفادات کےنگراں دفتر کے سربراہ مجتبی امانی نے مصری اخبار الاہرام کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے امریکی امداد کو مصر کے فائدے میں قرارنہ دیتے ہوئےکہا ہے کہ اسلامی جمہوریہ ایران ہنگامی بنیاد پر مصر کا تعاون کرنے کے لئے آمادہ ہے۔انھوں نے کہا کہ امریکہ کی امداد لینےکے بعد مصر میں بہت سے مشکلات پیدا ہوگئی ہیں اور امریکی امداد سے مصری استقلال اور قومی انقلاب کو نقصان پہنچ سکتا ہے اور امریکہ و اسرائیل بعض عرب ممالک کے ذریعہ مصری عوام کے انقلاب کے رخ کو موڑنے کی تلاش وکوشش کررہے ہیں۔ انھوں نے صاف الفاظ میں کہا کہ امریکی امداد مصری عوام اور حکومت کے فائدے میں نہیں ہے انھوں نے کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے تین دہائیوں سے امریکی امداد بند ہونے کے باوجود تمام شعبوں میں شاندار پیشرفت اور کامیابیاں حاصل کی ہیں اور ایران نے دنیا پر ثابت کردیا ہے کہ امریکہ کے بغیر زندگی جاسکتی ہے انھوں نے کہا کہ آج امریکہ ایران کی علمی پیشرفت کو روکنے کے لئے نت نئے بہانے تلاش کررہا ہے جبکہ ایران اپنے مکمل استقلال کی جانب بڑھ رہا ہے انھوں نے کہا کہ مصر میں بھی اپنے پاؤں پر کھڑا ہونے کی ہمت ہے کیونکہ مصری عوام حکومت کے ساتھ ہیں اور مصری عوام کی ہمراہی میں مصر شاندار ترقی حاصل کرسکتا ہے۔ مجتبی امانی نے اسرائیل کی طرف سے ایران پر حملے کے بارے میں پوچھے گئے سوال کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ اگر اسرائيل میں ہمت ہوتی تو وہ آج تک ایران پر حملہ کردیتا، کیونکہ اسرائیل نے عراق اور شام کی ایٹمی تنصیبات کو تباہ کرنے کے لئے کسی سے اجازت نہیں مانگی تھی لیکن اسرائیل میں ایران پر حملہ کرنے کی ہمت نہیں  کیونکہ حملہ کی صورت میں اسرائيل کا وجود ہی ختم ہوجائےگا۔

عراق کے وزیر اعظم نے عراق کے فراری قاتل و دہشت گرد نائب صدر طارق الہاشمی کے خلاف عدالت کے ٹھوس شواہد پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ الہاشمی کی دہشت گردانہ کارروائیوں میں بعض عرب ممالک کا بھر پورتعاون بھی شامل رہا ہے۔السومریہ سائٹ کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ عراق کے وزیر اعظم نوری مالکی نے عراق کے فراری قاتل و دہشت گرد نائب صدر طارق الہاشمی کے خلاف عدالت کے ٹھوس شواہد پر تاکید کرتے ہوئے کہا ہے کہ الہاشمی کی دہشت گردانہ کارروائیوں میں بعض عرب ممالک کا بھر پورتعاون بھی شامل رہا ہے۔ انھوں نے کہا کہ الہاشمی کا ہاتھ عراقی شہریوں کے خون سے رنگین ہے اور اس نے عراقی عوام اور عراق کے ساتھ زبردست خیانت کا ارتکاب کیا ہے انھوں نے کہا کہ نو ججوں پر مشتمل تحقیقاتی کمیشن نے بھی 150 سے زیادہ دہشت گرد کارروائیوں میں طارق الہاشمی کے ملوث ہونے کی تصدیق کی ہے۔ واضح رہے کہ طارق الہاشمی اپنے خصوصی محافظوں کے ذریعہ دہشت گردانہ کارروائیوں میں ملوث رہا ہے اس کے بعض خصوصی محافظوں کو ایک دہشت گرد کارروائی میں گرفتار کرلیا گیا جس کے بعد انھوں نے طارق الہاشمی کے ہولناک جرائم کا پردہ فاش کیا جس کے بعد عدالت نے طارق الہاشمی کی گرفتاری کے وارنٹ جاری کئے اور طارق الہاشمی بغداد سے فرار ہوکر عراق کے کردستان علاقہ میں روپوش ہوگیا ہے۔

عراق کی وزارت داخلہ کے ایک اعلی اہلکار کے مطابق علاقائی عرب ممالک عراق میں سرگرم القاعدہ دہشت گردوں کی مالی مدد کررہے ہیں۔رپورٹ کے مطابق عراقی وزارت داخلہ کے ایک اعلی اہلکار عدنان الاسدی نے العراقیہ ٹی وی چینل کے ساتھ گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ علاقہ کے عرب ممالک نہ صرف عراق میں دہشت گردوں کو بھیج رہے ہیں بلکہ ان کی مالی معاونت بھی کررہے ہیں انھوں نے کہا کہ خلیجی عرب ممالک بڑے تاجروں کے ذریعہ دہشت گردوں کو مالی تعاون فراہم کررہے ہیں جبکہ ان ممالک کی خفیہ ایجنسیاں اس معاملے کے بارے میں باخبر ہونے کے باوجود کوئی اقدام نہیں کررہی ہیں۔ الاسدی نے کہا کہ عرب ممالک کے اعلی سیاستداں اس بات سے لاعلمی کا اظءار کرتے ہیں جبکہ سب چیزيں ان کے علم میں ہیں۔ الاسدی نے کہا کہ خلیجی عرب ممالک دہشت گردوں اور امریکی سرگرمیوں کا مرکز بن گئے ہیں اور وہ علاقہ میں عدم استحکام پیدا کررہے ہیں۔

چین کے نائب وزير خارجہ نے شام میں جاری اصلاحات کے سلسلے میں عوامی ریفرینڈم کی مکمل حمایت کی ہے۔ رائٹرز کے حوالے سے نقل کیا ہے کہ چین کے نائب وزير خارجہ شای جون نے شام میں جاری اصلاحات کے سلسلے میں عوامی ریفرینڈم کی مکمل حمایت کی ہے۔ چین کے نائب وزير خارجہ نے کہا کہ چين ، شام میں صدر بشار اسد کی اصلاحات کی مکمل حمایت کرتا ہے چین کے نائب وزير خارجہ نے کہا کہ امیدہے کہ شام میں ریفرینڈم اس ملک میں امن و ثبات کا باعث بنے گا۔ انھوں نے کہا کہ ہم شامی حکومت کے مخالفین سے سفارش کرتے ہیں کہ وہ شام کے قومی دھارے میں شامل ہوجائیں۔ ادھر امریکہ نے مخالفین کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے  شام میں اصلاحات کو مضحکہ خیز قراردیا ہے۔

ملت جعفریہ کے قانونی مشیر شہید عسکری رضا کا چہلم پر دفاع تشیع کانفرنس ۱۸ فروری کو امروہہ گراونڈ میں منعقد ہوگی ۔  نامہ نگار کی خبر کے مطابق کانفرنس کا اہتمام شیعان علی پاکستان نے کیا ہے ۔ کانفرنس کا مقصد شیعہ مسلمانوں کی نسل کشی کی مذمت کرنا ہے ۔ کالعدم سپاہ یزید کے دہشت گردوں شہید عسکری رضا کو ۳۱ دسبر ۲۰۱۱ کی شام گلش چورنگی پر شہید کیا تھا ۔ ان کا چہلم اور کانفرنس سے متعلق سیکڑوں بینرز اور پوسٹر شہر کراچی میں آویزہ کیے گئے ہیں۔ یاد رہے کے شہر کراچی میں گزشتہ چھ ماہ میں پانچ وکلاء بشمول ایڈوکیٹ مختار بخاری شہید کیے جاچکے ہیں ۔اس موقع پر نہایت افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ ملت شیعان پاکستان اور اس کے تمام ذمہ دار احباب اور مقتدر سیاسی و سماجی شخصیات اور تنطیموں نے اب تک سوائے زبانی کھوکلے نعروں اور اخباری بیانات کے سوا کو بھی خاطر خواہ اقدام نہ کیا کیونکہ ذمہ دار حلقوں کو ملت کی افرادی قوت اس کی فلاح و بہبود اور وسائل کے حقیقی تعمیری استعمال سے کوئی سروکار نہیں۔ انتہائی دکھ اور افسوس کے ساتھ کہنا پڑھتا ہے کہ ملت شیعان پاکستاں کے زمہ دار حلقے صرف اور صرف ہر وہ کام انجام دیتے ہیں جس میں نمودو نمائش زیادہ سے زیادہ ہو، ان کے پاس اپنی ملت کی تعمیر و تربیت کے ثمرات کو ملت کے ہر فرد تک پہنچانے کے لیے کوئی خاظر خواہ راہ عمل نہیں ہےحد تو یہ ہے کہ اگر کوئی شیعہ اپنے بچوں کو کسی شیعہ اچھی اسکول میں تعلیم نہیں دلوا سکتا کیوں کہ ان معیاری شیعہ اسکولوں کی فیسیں ہی اتنی زیادہ ہیں کہ عام شعیہ گھرانے کے بس میں نہیں ہے جس کے سبب سے ملت کے بے شمار شیعہ گھرانے اپنے بجوں کو گورنمٹ یا اور دیگر نجی پرائیوٹ (اہلسنت کے) اسکولوں میں تعلیم دلوانے پر مجبور ہیں، اس کے علاوہ اور بھی بہت سے شعبے تنزلی کا شکار ہیں، خدارہ اجتماعیت کو فروغ دیجئے، حقیقت بینی سے کام لیتے ہوئے سوچے، اتحاد قائم کریں، اس کی روشن مثال ہمارے سامنے خوجہ شیعہ عثاء عشری جماعت کی ہے کہ انھوں نے دیکھیے کس طرح اپنے آپ کو تعلیم اور غرض تقریبا” ہر میدان میں اپنے آپ کو اور اپنی جماعت کے وسائل کو کس طرح بہتریں اور عمدہ طریقے سے استعمال کرنے کے لیے اتحاد کیا ہے۔۔۔کیا یہی مثال ہم بھی قائم نہیں کر سکتے ہر شعبہ میں ….ذرا سوچیے۔

دہشت گرد وکالعدم تحریک طالبان کے علاقائی رہنما دہشت گرد ملا فضل سعید نے پاراچنار میں شیعہ مسلمانوں پر ہونے والے خد کش حملے کی ذمہ داری قبول کر لی ہے جسمیں 26 شیعہ مسلمان شہید اور 47 سے زائد شدید زخمی ہیں۔طالبان کے دہشت گرد لیڈر نے نا معلوم مقام سے رائٹر کو ٹیلی فون پر بتاتے ہوئے کہاکہ طالبان کی جانب سے شیعہ مسلمانوں کو حملہ کا نشانہ بنانے کی وجہ ان کا طالبان مخالف سرگرمیوں میں ملوث ہونا ہے، اس نے مزید کہا کہ ہم علاقے کی پولیٹیکل ایڈمنسٹریشن کو بھی متنبہ کرتے ہیں کہ ہمارے معاملات میں شیعہ مسلمانوں کا ساتھ نہ دیں۔ واضح رہے کہ خودکش بمبار نے اپنے آپ کو فاروقیہ مسجد کے پاس جہاں شیعہ آبادی واقع ہے اپنے آپ کو دھماکہ سے اڑا لیا، جس میں 26شیعہ مسلمان موقع پر ہی شہید ہوگئے اور 40 سے زائد شدید زخمی ہوگئے۔ کرم ایجنسی پاکستان کے سرحدی علاقوں میںواقع ہے جہاں شیعہ مسلمانوں کی اکثریت ہے ۔کرم ایجنسی پچھلے تین دہا ہیوں سے دہشت گردی کی بھینٹ چڑھا ہوا ہے ۔دہشت گردی کے ان وارداتوں میں حکومتی سرپرستی کے حامل طالبان ملوث ہے ، تحریک طالبان القائدہ اور افغانی طالبان پاکستان کے سحدی علاقوں میں شیعہ مسلمانوں کے خلاف دہشت گردی کا سلسلہ سالوں سے جاری ہے مگر حکومت پاکستان اس کا نوٹس نہیں لیتی

کراچی: ٹی وی رپورٹ, جیو کے پروگرام ”آج کامران خان کے ساتھ“میں تجزیہ کرتے ہوئے میزبان نے کہا کہ خطے میں موجود صورتحال کے حوالے سے جمعرات کا دن نہایت اہم ہے، پاکستان کے قریب ترین ہمسایوں افغانستان اور ایران کے صدور پاکستان میں ہیں، احمدی نژاد نے صدر آصف زرداری سے پُرجوش مصافحہ کیا ہے ، امریکا ضرور ناراض ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ایران کے صدر احمدی نژاد پہلی بار پاکستان کے سرکاری دورے پر موجودہ حکومت کے دور میں آئے ہیں۔ صدر آصف زرداری کی صدر احمدی نژاد کو پاکستان آنے کی دعوت دینا اور ان کے ساتھ بغلگیر ہونا اور انتہائی گرمجوشی سے مصافحہ کرنا پاکستان اور ایران کے قریبی تعلقات کیلئے ایک اہم سنگ میل ثابت ہوسکتا ہے۔ کامران خان نے کہا کہ اس پیشرفت پر مغربی قوتیں خاص طور پر امریکا ناراض ہوسکتا ہے اور پاکستان کا ایران کو گلے لگانا امریکا کو پسند نہیں آئے گا۔ امریکا آج کل ایران کو کنارے لگانے کی کوشش کررہا ہے، امریکا نے نہ صرف خود ایران پر پابندیاں لگائی ہیں بلکہ یورپی یونین سے بھی ایران کے خلاف پابندیاں لگانے کا کہا ہے۔ امریکا کی کوشش ہے کہ ایران کو اس کے وسائل سے محروم کردیا جائے ، اسے کسی صورت بھی پسند نہیں آئے گا کہ دنیا کی کوئی قوت خاص طور پر پاکستان اس کے دشمن ایران کو گلے لگائے۔ انہوں نے کہا کہ یہ بات اہم ہے کہ اپنے دور حکومت میں صدر آصف زرداری نے چار مرتبہ ایران کا دورہ کیا ہے اور اب ایران کے صدر احمدی نژاد پاکستان کے دورے پر آئے ہیں۔ ایران ، پاکستان اور افغانستان کی سیاسی اور فوجی قیادت جمع ہوئی ہے کہ اس خطے میں ہونے والی تبدیلیوں کے حوالے سے ہمسایہ ممالک کی پالیسی یکسا ں ہو۔ سینئر تجزیہ کار فرخ سلیم نے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان اور ایران کے درمیان ایک تو سیاسی سطح کے تعلقات ہیں، دوسرے دہشتگردی کے خلاف جنگ میں تعاون کے حوالے سے اور تیسرے اقتصادی تعلقات ہیں۔ اقوام متحدہ کی طرف سے ایران پر بہت سی پابندیاں لگائی جاچکی ہیں جن کی پابندی کرنا پاکستان پر لازم ہے۔ اس کے علاوہ یورپی یونین ، آسٹریلیا، کینیڈا، سوئٹزرلینڈ، جاپان اور امریکا نے بھی ایران پر پابندیاں لگائی ہوئی ہیں۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ایران کے اقتصادی تعلقات میں ایک سنگین قسم کا ادائیگی کا بحران پیدا ہوتا نظر آرہاہے، دنیا کی تاریخ کبھی اتنی سخت فائنانشل پابندیاں کسی ملک پر نہیں لگیں جتنی ایران پر لگائی گئی ہیں۔ فرخ سلیم نے کہا کہ پاکستان ایران گیس پائپ لائن بچھانے کیلئے تقریباً 8بلین ڈالر کے قرضے چاہئیں لیکن دنیا کا کوئی بھی مالی ادارہ اس پائپ لائن کو فنڈ دینے کیلئے بالکل تیار نہیں ہے۔اب پاکستان کیلئے ایران سے اقتصادی تعلقات مزید بڑھانا بہت مشکل ہوجائے گا۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان میں پاکستان نے دس سے بارہ سال تک ایران کے خلاف پراکسی جنگ لڑی ہے، ایران شمالی اتحاد کا ساتھ دے رہا تھا اور ہم طالبان کا ساتھ دے رہے تھے۔

 امريکي ايوان نمائندگان ميں بلوچستان کو حق خود اراديت سے متعلق قرار داد پيش کردي گئي ہے، جس ميں کہا گيا ہے کہ بلوچ عوام کو اپنے لئے آزاد ملک کا حق حاصل ہے. امريکي ايوان نمائندگان ميں رکن کانگريس ڈينا روہرا باکر نے بلوچستان کو حق خود اراديت سے متعلق قرار داد پيش کي ہے. قرار داد کے متن ميں کہا گيا ہے کہ بلوچ عوام کو اپنے لئے آزاد ملک کا حق حاصل ہے، بلوچوں کو پاکستان ميں سياسي اور نسلي امتياز کا سامنا ہے اور انہيں ماورائے عدالت قتل کيا جارہا ہے. قرار داد ميں مزيد کہا گيا ہے کہ بلوچستان اس وقت ايران، افغانستان اور پاکستان ميں تقسيم ہے. قرار داد ميں مو?قف اختيار کيا گيا ہے کہ پاکستان ميں بلوچ عوام پر ظلم کيا جارہا ہے اور امريکا بلوچ عوام پر ظلم کرنے والوں کو ہي اسلحہ اور امداد فراہم کررہا ہے.امریکی ایوان نمائدگان کے اس اقدام سے مکمل طور پر اس بات کی تصدیق ہوتی ہے کہ پاکستان کے ہر شہر اور علاقہ میں ہونے والے بم دھاکوں، ٹارگیٹ کلنگ اور دہشت گردی سمیت تمام ملک دشمن کاروائیوں میں امریکہ ایجنٹ اور امریکی مفاد پرست عناصر خواہ وہ سیاسی شخصیات ہوں یا دیگر شعبہ زندگی سے وابستہ عناصر ہوں جو کہ امریکی حمایت یافتہ ہیں بھر پور طریقے سے شامل ہیں، امریکی ایوان نمائندگاں کا یہ اقدام جو کہ برادر ملک اسلامی جموریہ ایران کے صدر ڈاکٹر احمدی نژاد کے دورئے پاکستان کے موقع پر کرنا بظاہر یہ ظاہر کرتا ہے کہ پاکستان کو ایران سے دوستی کرنے کی سزا دی جائے۔ اس مرحلے پر سیاسی بصیرت کا مظاہرا کرتے ہوئے ملک کے ذمہ دار  اداروں کو امریکی مفادات سے کنارہ کشی اختیار کرنا چاہیے کیونکہ پاکستان ہے تو ہم ہیں ورنا کچھ بھی نہیں، امریکا کا یہ اقدام پاکستان دشمنی کے مترادف ہے اس پر امریکی سفیر کو ملک سے نکال دینا چاہیے

پارہ چنار…کرم ايجنسي کے صدر مقام پاراچنار کے مين بازار ميں ہونے والے خودکش دھماکے ميں افراد جاں بحق افرادکي تعداد 21 ہوگئي ہے جبکہ چاليس سے زائد افراد زخمي ہيں.پوليٹيکل انتظاميہ کے مطابق پاراچنار کے مين بازار ميں  آج دوپہر خود کش دھماکا ہوا،دھماکے سے بازار کي متعدد دکانوں کو نقصان پہنچاہے.دھماکے کے بعد فوري طور پر امدادي کارروائي شروع کردي گئي ہے،اکيس افراد کي لاشيں ڈسٹرکٹ ايجنسي اسپتال منتقل کيا گيا،زخميوں اور لاشوں کو پاراچنار اسپتال منتقل کياگيا . نمائندے کے مطابق خودکش حملہ آور نے نمازجمعے کے بعد حملہ کيا.

اسلام آباد…پاکستان نے ايران نے يقين دہاني کرادي ہے کہ پاکستان کوامريکا کو ايران پر حملے کيلئے کوئي اڈہ فراہم نہيں کرے گا.يہ يقين دہاني پاک ايران افغان صدور بات چيت ميں کرائي گئي .پاکستان کے صدر آصف علي زرداري نے پاکستان ، افغانستان اور ايران کے درميان جاري سہ فريقي مذاکرات کے دوران ايران صدر احمد نژاد کو يہ يقين دہاني کرائي ہے کہ اگرامريکا ايران پر حملہ کرتا ہے تو پاکستان اس کا ساتھ نہيں دے اور نہ ہي کوئي اڈہ فراہم کر ے گا.

اسلام آباد … ايران نے پاکستان کو گيس کي دگني سپلائي دينے کي پيش کش کي ہے اور ايران پاکستان کيلئے گيس کے نرخ ميں کمي پر بھي غور کرے گا. اسلام آباد ميں وزارت تيل و گيس کے ذرائع نے جيو نيوز کوبتايا کہ ايراني صدر احمدي نژاد کے دورہ پاکستان ميں ايران پاکستان گيس پائپ لائن کي گيس سپلائي ميں اضافے کي پيش کش کي گئي ہے. ذرائع کے مطابق ايران نے پاکستان کيلئے 75 کروڑ مکعب فٹ يوميہ گيس کي بجائے ڈيڑھ ارب مکعب فٹ يوميہ گيس کي پيش کش کي گئي ہے. ذرائع کے مطابق ايران گيس کے نرخ ميں کمي پر بھي غور کر رہا ہے اور گيس پائپ لائن دگني گنجائش کي بچھائي جاسکتي ہے

بيروت … لبنان کي مزاحمتي تنظيم حزب اللہ کے سربراہ حسن نصراللہ نے بھارت اورجارجيا ميں اسرائيلي سفارتخانوں پر حملوں ميں ملوث ہونے کاالزام بے بنياد ٹھہراديا ہے اور کہاہے کہ اپنے ليڈر کابدلہ لينے کے ليے عام اسرائيلي شہري،سفارتکار يافوجي کو مارنا تنظيم کے ليے شرمناک کام ہے.بيروت ميں جلسے سے خطاب کرتے ہوئے حزب اللہ کے سربراہ نے کہاکہ وہ يہ بيان اس ليے دينے پرمجبورہوئے کيونکہ حزب اللہ کو ان دھماکوں ميں ملوث ٹھہرانيکي کوشش کي جارہي ہے.جبکہ تنظيم کا ان سے تعلق ہي نہيں. حسن نصراللہ نے کہاکہ اسرائيل جانتاہے کہ حزب اللہ اپنے عظيم رہنما ايمادمغنيہ کي شہادت کابدلہ لينے کے ليے کيا اقدام کريگي اوروہ دن بھي ضرورآئيگا.اس سے پہلے ايران بھي ان دھماکوں ميں ملوث ہونيکااسرائيلي الزام مستردکرچکاہے.