مقام معظم رهبری کے بیانات سے ورلڈ میڈیا میں ہلچل

Posted: 11/02/2012 in All News, Breaking News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Pakistan & Kashmir, Palestine & Israel, Russia & Central Asia, Survey / Research / Science News, USA & Europe

جرمن نیوز ایجنسی کے مطابق مقام معظم رهبری کا کہنا تھا کہ ایران کسی کی دھمکیوں کی وجہ سے اپنے اٹامک پروگرام سے دستبردار نہیں ہو گا، ان کا کہنا تھا کہ ایران خود پر لگائی گئی پابندیوں کا منہ توڑ جواب دے گا۔مقام معظم رهبری کے بیانات سے ورلڈ میڈیا میں ہلچل کا سماں، ہر اخبار نے ان کے بیانات میں سے مختلف اہم نکات کا انتخاب کیا، فارس نیوز کے مطابق مقام معظم رہبری کے نمازِ جمعہ کے خطبے کے فورا بعد رویٹرز نیوز ایجنسی نے لکھا جمعے کے دن ایران کے سپریم لیڈر نے کہا کہ ایران کسی کی دھمکیوں کی وجہ سے اپنے اٹامک پروگرام سے دستبردار نہیں ہو گا، ان کا کہنا تھا کہ ایران خود پر لگائی گئی پابندیوں کا منہ توڑ جواب دے گا۔
رویٹرز نیوز کے مطابق رهبر انقلاب اسلامی نے کہا کہ ایران پر حملہ کرنے کی دھمکیاں یا ایران پر حملہ کرنے سے خود امریکہ کو نقصان پہنچے گا۔ ایران پر اقتصادی پابندیوں کا ایران کے اٹامک پروگرام سے کوئی تعلق نہیں۔ انہوں نے جنگ، ایران پر اقتصادی پابندیوں اور تیل نہ خریدنے کی امریکی دھمکیوں کے جواب میں کہا کہ ہمارے پاس بھی دھمکیوں کی کمی نہیں لیکن ہم ان کو مناسب وقت پر استعمال کریں گے۔   
رویٹرز نیوز ایجنسی نے مقام معظم رهبری  کے بیان کو نقل کرتے ہوئے کہا کہ “مجھے یہ کہنے میں کوئی ڈر یا باک نہیں کہ جو قوم یا گروہ اسرائیل کا مقابلہ کرے گا ہم اسکی علی الاعلان حمایت کریں گے”۔ پاکستانی اخبار ڈان نے بھی رویٹرز کی اس خبر کو من و عن لگایا ہے۔ 
آذر بائیجان کی نیوز ایجنسی ترند نے مقام معظم رهبری کے بیانات کو کچھ اس طرح بیان کیا ہے،”انقلابِ اسلامی، ایران کے لوگوں کے لئے آزادی اور عزت لایا، انقلابِ اسلامی ایران نے اسلام مخالف قوتوں کو درھم برھم کر دیا اور ڈیکٹیٹر شپ کو ڈیمو کریسی میں تبدیل کر دیا۔ انہوں نے مزید کہا کہ ایران نے اقتصادی پابندیوں کے باوجود عظیم کامیابیاں حاصل کی ہیں”۔ ترند نیوز نے رہبر معظم‌ کے بیان کو نقل کرتے ہوئے کہا کہ بحرین کے بارے میں مقام معظم رهبری کا کہنا تھا کہ اگر ایران نے بحرین میں مداخلت کی ہوتی، تو بحرین کے انقلاب کی صورتحال کچھ اور ہوتی۔
فرانس نیوز ایجنسی نے مقام معظم رهبری کے بیانات کو کچھ یوں نقل کیا کہ ایران خود پر لگائی گئی پابندیوں اور دھمکیوں کا محکم جواب دے گا۔ اسرئیلی اخبار Haaretz نے تمام خبروں کو رویٹز نیوز کے مطابق نقل کیا ہے۔ ایک اور اسرائیلی اخبار بدیعوت آحارونوت نے نیز  مقام معظم رهبری کے بیانات میں سے اس فراز کا انتخاب بطور عنوان کیا ہے۔ کہ “اسرائیل ایک سرطانی غدہ ہے”، اس اخبار نے مزید نقل کیا ہے، امریکہ کی ایران کو دھمکیوں سے اسے خود کو ہی نقصاں پہنچے گا۔ اسرائیلی اخبار کا کہنا تھا کہ آیت اللہ خامنہ ای کا اشارہ آبنائے ہرمز کی بندش کی طرف تھا۔ 
اسوشیتد پریس کے مطابق ایران کے رهبرِ عالی نے اپنے بیانات میں اسرائیل کو سرطان سے تشبیہ دیتے ہوئے کہا جو قوم یا گروہ اسرائیل کا مقابلہ کرے گا ہم اسکی علی الاعلان حمایت کریں گے، انہوں نے اپنے بیانات کہا کہ ایران نے اسرائیل کے مقابلے پر حماس اور حزب اللہ کی حمایت کی۔
جرمن نیوز ایجنسی کے مطابق مقام معظم رهبری کا کہنا تھا کہ  ایران کسی کی دھمکیوں کی وجہ سے اپنے اٹامک پروگرام سے دستبردار نہیں ہو گا، ان کا کہنا تھا کہ ایران خود پر لگائی گئی پابندیوں کا منہ توڑ جواب دے گا۔ انہوں نے کہا کہ ایران نے اقتصادی پابندیوں کے باوجود ٹیکنالوجی کے میدان میں مثالی ترقی کی ہے، اور نئی اقتصادی پابندیوں سے بھی ایران کو کوئی فرق نہیں پڑے گا۔ اسی نیوز ایجنسی نے رهبر انقلاب اسلامی کے بیانات کی تحلیل کرتے ہوئے کہا کہ متحدہ عرب امارات ایران سے مذاکرات کرنے سے ہراساں ہے، اور سمجھتا ہے کہ جنگ اور خونریزی ہی تمام مسائل کا حل  ہے۔  رهبر انقلاب اسلامی کے بیانات کی بازگشت ابھی بھی ورلڈ میڈیا پر جاری ہے۔

Comments are closed.