اسرائیل کے خلاف33 روزہ جنگ میں اگر ایران حمایت نہ کرتا توحزب اللہ کامیاب نہیں ہوسکتی تھی ، سید حسن نصراللہ

Posted: 11/02/2012 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Religious / Celebrating News

حزب اللہ لبنان سربراہ نے سید حسن نصر اللہ نے کہا ہے کہ اگر اسرائیل کے خلاف33 روزہ جنگ میں ایران کی حمایت نہ ہوتی توحزب اللہ کامیاب نہیں ہوسکتی تھی ایران کی جانب سے استقامت کی حمایت نے ہماری کامیابی کو یقینی بنایا اور اس کامیابی میں شام نے بھی اہم کردار ادا کیا۔وہ ہفتہ وحدت کی مناسبت سے جنوبی بیروت کے سید الشہدا ء کمپلیکس میں منعقدہ تقریب سے خطاب کر رہے تھے ، انہوں نے کہا کہ ایران کے خلاف آٹھ سالہ جنگ میں امریکہ، اسرائیل اور بعض عرب ممالک صدام کی مدد کر رہے تھے کہا کہ عرب ممالک کی دولت استقامت اور فلسطین و بیت المقدس کی آزادی کے لیے خرچ ہونے کے بجائے ایران کے خلاف جنگ میں خرچ ہوئی۔انہوں نے شام کے خلاف امریکہ، اسرائیل اور میانہ رو عرب ممالک کی سازش کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ اس سازش کا اصلی مقصد استقامت اور فلسطینیوں کو نقصان پہنچانا ہے۔ حزب اللہ کے سربراہ سید حسن نصر اللہ نے تسلیم کیا ہے کہ ایران 1982 سے انکی تنظیم کی ہر لحاظ سے اخلاقی، سیاسی اور اقتصادی مدد کر رہا ہے، لیکن ہم دعویٰ کرتے ہیں کہ حزب اللہ تہران کے حکم پر نہیں چلتی۔انہوں نے کہا کہ ہماری تنظیم نے اب پالیسی بدل دی ہے، اسرائیل نے ایران پر حملہ کیا تو تہران حزب اللہ سے حملے کے لیے نہیں کہے گا، اگر ایران پر حملہ ہوا تو حزب اللہ کی قیادت سوچ سمجھ کر فیصلہ کریگی۔ شام کے بارے میں ا انہوں نے کہا کہ اسرائیل صدر بشارالاسد کی حکومت کا خاتمہ چاہتا ہے اس لیے شام میں خانہ جنگی کی سازش کی جا رہی ہے، جو ناکام رہے گی۔

Comments are closed.