امریکی فوج میں خودکشی کی نسبت گھریلو تشدد اور جنسی جرائم میں اضافہ

Posted: 28/01/2012 in All News, Amazing / Miscellaneous News, Important News, Survey / Research / Science News, USA & Europe

واضح رہے کہ 2006ء سے امریکی فوج میں جنسی جرائم اور گھریلو تشدد میں 30 فیصد اور بچوں کے ساتھ جنسی زیادتیوں میں 43 فیصد اضافہ ہوا۔امریکی فوج میں پہلے کی نسبت خودکشیوں کی تعداد میں کمی اور گھریلو تشدد اور جنسی جرائم میں اضافہ ہوا ہے۔ اس رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ 2011ء میں 278 امریکی فوجیوں نے خودکشی کی اور یہ تعداد 2010ء میں سامنے آنے والی تعداد سے 9 فیصد کم ہے۔ واضح رہے کہ گزشتہ 4 سال میں یہ پہلی مرتبہ ہے کہ امریکی فوج میں خودکشیوں کی تعداد میں کمی آئی ہے، خودکشیوں کے علاوہ اس رپورٹ میں فوجیوں میں حادثات کے بعد سامنے آنے والے ذہنی دباو کا بھی خدشہ ظاہر کیا گیا ہے اور بتایا گیا ہے کہ اس مرض میں فوجیوں کی تعداد 4 لاکھ 72 ہزار سے بھی زیادہ ہو سکتی ہے۔   پینٹاگون میں نیوز کانفرنس کے دوران جنرل پیٹر چارلی نے صحافیوں کو بتایا، اگرچہ اس رپورٹ میں بہت سی اچھی خبریں ہیں، لیکن ان کے ساتھ ساتھ بری خبریں بھی ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ ہمیں معلوم ہے کہ ہمیں اس صورتِحال کو سلجھانے کے لیے ابھی بہت کام کرنا ہے۔ واضح رہے کہ 2006ء سے امریکی فوج میں جنسی جرائم اور گھریلو تشدد میں 30 فیصد اور بچوں کے ساتھ جنسی زیادتیوں میں 43فیصد اضافہ ہوا، منظرِ عام پر آنے والی اس رپورٹ میں ایک 2010ء کی رپورٹ کا بھی تذکرہ ہے، جس میں کہا گیا ہے کہ امریکی فوج یا تو خودکشی کے بارے میں سوچنے والے فوجیوں کی حالت پر دھیان نہیں دے رہی یا پھر فوج ان کی طبیعت سے ناآشنا ہے۔ رپورٹ میں اس صورتِحال کی وجہ امریکی فوجیوں کی عراق اور افغانستان میں تعیناتی بھی بتائی گئی ہے۔

Comments are closed.