امام خمینی کو جو اعلیٰ مقام حاصل ہوا وہ بہت کم شخصیات کو ملتا ہے، کرامت اللہ چغرمٹی

Posted: 28/01/2012 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Local News, Pakistan & Kashmir, Russia & Central Asia

شاور میں متعین اسلامی جمہوریہ ایران کے قونصل جنرل حسن درویش وند سے گفتگو کرتے ہوئے سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی کا کہنا تھا کہ امام خمینی ایک روحانی شخصیت کے علاوہ ایک عالمی رہنماء اور مدبر سیاستدان تھے جنہوں نے دوسروں کیلئے کئی ایک قابل تقلید مثالیں قائم کیں، پاکستان اور ایران اسلامی بھائی چارے اور دوستی کے لازوال رشتوں میں بندھے ہوئے ہیں۔سپیکر خیبر پختونخوا اسمبلی کرامت اللہ خان چغرمٹی نے کہا ہے کہ پاکستان اور ایران اسلامی بھائی چارے اور دوستی کے لازوال رشتوں میں بندھے ہوئے ہیں، امام خمینی کو جو اعلیٰ مقام حاصل ہوا ہے وہ بہت ہی کم شخصیات کو ملتا ہے، ان خیالات کا اظہار انہوں نے اسمبلی چیمبر میں پشاور میں متعین اسلامی جمہوریہ ایران کے قونصل جنرل حسن درویش وند سے گفتگو کرتے ہوئے کیا، سپیکر صوبائی اسمبلی نے کہا کہ آیت اللہ امام خمینی ایک روحانی شخصیت کے علاوہ ایک عالمی رہنماء اور مدبر سیاستدان تھے جنہوں نے دوسروں کیلئے کئی ایک قابل تقلید مثالیں قائم کیں، انہوں نے کہا کہ امام خمینی کو جو اعلیٰ مقام حاصل ہوا ہے وہ بہت ہی کم شخصیات کو ملتا ہے، وقت کے ساتھ ساتھ دونوں ممالک کے تعلقات مزید مستحکم اور پائیدار ہو رہے ہیں۔  انہوں نے کہا کہ دونو ں برادر اسلامی ممالک کے عوام میں بھی نجی طور بھی خوشگوار تعلقات قائم ہیں، صوبہ خیبر پختونخوا بالخصوص پشاور کے گھرانوں میں فارسی بولی اور سمجھی جاتی ہے، انہوں نے کہا کہ وفود کی ملاقاتوں سے ممالک کے نہ صرف تعلقات مزید مضبوط ہوتے ہیں بلکہ ان سے عوام بھی ایک دوسرے کے قریب تر ہوتے ہیں، ایرانی قونصل جنرل حسن درویش وند نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ وہ بالخصوص پشاور کو اپنا دوسرا گھر تصور کرتے ہیں، پشاور انہیں اپنے دیس جیسا محسوس ہوتا ہے، انہوں نے کہا کہ صوبہ خیبر پختونخوا اور ایران کی تہذیب و ثقافت اور رسم و رواج میں تقریباً یکسانیت ہے، اس موقع پر حسن درویش وند نے سپیکر صوبائی اسمبلی کو ایران کے دورے کی دعوت دی جو انہوں نے قبول کرلی، ملاقات میں سپیکر اسمبلی نے ایرانی قونصل جنرل کو اسمبلی کا سونئر پیش کیا جبکہ ایرانی قونصل جنرل نے سپیکر صوبائی اسمبلی کو ایران کی سوغات پر مشتمل ایک تحفہ پیش کیا۔

Comments are closed.