بڑی طاقتوں کا ایران سے دوبارہ مذاکرات شروع کرنیکا عندیہ

Posted: 23/01/2012 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Religious / Celebrating News, Russia & Central Asia, USA & Europe

واشنگٹن : بڑی طاقتوں نے ایران کے ساتھ مذاکرات دوبارہ شروع کرنے کا عندیہ دے دیا تاہم اس کے لئے تہران پر سنجیدہ روئیے کی شرط عائد کی گئی ہے۔ مغربی سفارتکاروں کے بقول اس حوالے سے بڑی طاقتیں ایران کے جوہری تنازعے پر یکساں موقف نہیں رکھتیں، واضح رہے کہ ان طاقتوں میں برطانیہ، چین، فرانس، جرمنی، روس اور امریکہ شامل ہیں۔ یورپی یونین کی خارجہ امور کی  سربراہ کیتھرین ایشٹن کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ ایران کے ساتھ سفارتکاری کا راستہ تمام تر پابندیوں اور فوجی حملے کے شبہات کے باوجود کھلا ہوا ہے۔ بیان کے مطابق یورپی یونین اس حوالے سے ایران کے ردعمل کا انتظار کر رہی ہے۔ اس سے قبل گزشتہ روز چین نے اپنے ملک میں آنے والے ایرانی وفد جس کی سربراہی ایرانی سپریم سیکیورٹی کونسل کے نائب سیکرٹری علی باقری کر رہے تھے، کو جوہری تنازعے پر بات چیت کو اولین ترجیح بنانے کو کہا۔ چینی خبررساں ادارے کے مطابق چین کا ماننا ہے کہ ایرانی جوہری تنازعہ پرامن طریقہ سے مذاکرات کے ذریعے حل ہونا چاہئے، اس سلسلے میں پابندیاں اور فوجی حملہ کارگر ثابت نہیں ہوں گے۔ دوسری جانب امریکی وزیر خارجہ ہیلیری کلنٹن نے واشنگٹن میں جرمن ہم منصب کے ہمراہ کہا ہے کہ ہم کوئی تصادم نہیں چاہتے بلکہ ہم ایرانی عوام کا بہتر مستقبل چاہتے ہیں۔ سفارتکاروں کا کہنا ہے کہ مذاکرات کے عندئیے کے باوجود بڑی طاقتیں ایران کو مذاکرات شروع کرنے کے لئے دی جانے والی مراعات کے حوالے سے منقسم نظر آتی ہین۔

Comments are closed.