جاپان، چوتھا ایٹمی ری ایکٹر بھی دھماکے سے پھٹ گیا، ایک اور زلزلے سے خوف،ٹوکیو اسٹاک مارکیٹ کریش

Posted: 15/01/2012 in All News, Breaking News, China / Japan / Koriea & Others, Pakistan & Kashmir, Russia & Central Asia, Survey / Research / Science News, USA & Europe

ٹوکیو ( ایجنسیاں) جاپان میں زلزلے کے باعث فوکوشیما ایٹمی پاور پلانٹ کا بحران مزید سنگین ہوگیا ہے اور گزشتہ روز چوتھا ری ایکٹر بھی دھماکے سے پھٹ گیا جس سے تابکاری کے اخراج میں مزید اضافہ ہوگیا، جاپانی حکام نے 30 کلومیٹر کے اطراف سے لوگوں کو نکل جانے کے احکامات جاری کردیئے ہیں جبکہ تابکاری کے اثرات اب فوکوشیما سے نکل کر ایباراکی ، سائی تامہ اور ٹوکیو تک پہنچ گئے ہیں۔ تاہم جاپانی ایٹمی ماہرین کا کہنا ہے کہ ٹوکیو اور اطراف کے علاقوں میں پہنچنے والی تابکاری تاحال انسانی صحت کیلئے خطرے کا باعث نہیں۔ زلزلے ، سونامی اور ایٹمی بحران سے جاپان کی معیشت کو شدید دھچکا لگا ہے اور ٹوکیو اسٹاک مارکیٹ کریش کرگئی ہے اور گزشتہ تین دنوں میں ایک ہزار پوائنٹ کم ہوگئے اور حکومت نے عوام سے نقد امداد کی درخواست کردی ہے اور سرکاری ٹی وی پر امداد کے اعلانات کئے جارہے ہیں۔ جبکہ گزشتہ روز زلزلے کا ایک اور جھٹکا محسوس کیا گیا جس کی شدت ریکٹر اسکیل پر 6ریکارڈ کی گئی، زلزلے کے ان جھٹکوں سے لوگوں میں خوف و ہراس پھیل گیا اور وہ اپنے گھروں سے باہر نکل آئے، حکام کے مطابق زلزلے کا مرکز ٹوکیو سے 120 کلو میٹر دور شیزو کا میں ماوٴنٹ فیوجی کے نزدیک تھا۔ دوسری جانب آئی اے ای اے نے صورتحال کو سنگین قراردیاہے تاہم چرنوبل جیسے حادثہ کے امکان کو ردکردیاہے۔ جاپانی حکام ایٹمی پلانٹ سے تابکاری کے اخراج کو روکنے کیلئے بھرپور کوششیں کررہے ہیں جس میں انہیں انٹرنیشنل اٹامک انرجی ایجنسی سمیت امریکا اور برطانیہ کے ماہرین کی خدمات حاصل ہیں ۔ معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ جاپانی معیشت کو زلزلے سے ہونے والے نقصان کا ازالہ کرنے کیلئے تین سے چار سال درکارہوں گے۔ جبکہ ایٹمی تابکاری کے اخراج کے بعد ایک بار پھر جاپان سے پاکستانیوں کے انخلا کے بارے میں سوالات پیدا ہوگئے ہیں کیونکہ اس وقت پاکستان جانے والی تمام ایئر لائنوں میں سیٹیں ختم ہوچکی ہیں جس کے باعث زلزلے سے متاثرہ علاقوں اور ایٹمی تابکاری کے اثرات کے زیر اثر علاقوں میں ابھی تک ہزاروں پاکستانی موجود ہیں جن کے اخراج کا تاحال کوئی منصوبہ زیر غور نہیں۔علاوہ ازیں جاپانی وزیراعظم نے میڈیا کو بریفنگ میں بتایا کہ زلزلے سے متاثرہ فوکوشیما ایٹمی پلانٹ کے ری ایکٹر نمبر چار میں آگ لگی ہے جس کی وجہ سے تابکاری کی سطح انسانی صحت کیلئے خطرناک حدتک پہنچ گئی ہے۔

Comments are closed.