امام حسین علیہ اسلام کا چہلم، مرکزی جلوس کی سیکورٹی، ٹریفک کے لئے متبادل انتظامات

Posted: 15/01/2012 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

کراچی (اسٹاف رپورٹر) وزیر داخلہ سندھ منظور حسین وسان نے ایڈیشنل چیف سیکرٹری محکمہ داخلہ سندھ، آئی جی سندھ اور کمشنر کراچی کو چہلم حضرت امام حسینکے جلوس اور مجالس کے لیے موٴثر سیکورٹی انتظامات کی ہدایات دیتے ہوئے مرکزی جلوس کی فضائی نگرانی کے موٴثر انتظامات اور جلوس کے تمام روٹ کو ڈبل سیل کرنے کے ساتھ ساتھ 200 سے زائد بلند عمارتوں پر پولیس اہلکار تعینات کرنے کی ہدایات دی ہیں جبکہ ٹریفک پولیس نے اس موقع پر ٹریفک کے لیے متبادل انتظامات کا اعلان کیا ہے۔ چہلم حضرت امام حسین کے موقع پر جلوسوں/ مجالس کے لیے سیکورٹی منصوبہ تیار کرلیا ہے جس کے تحت کڑی نگرانی کے عمل کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کے موٴثر رابطوں کے ذریعے یقینی بنایا جا رہا ہے۔ محکمہ پولیس کے اعلامیہ کے مطابق انسپکٹر جنرل پولیس سندھ مشتاق احمد شاہ نے ہدایات دیں کہ چہلم حضرت امام حسین کے جلوسوں / مجالس میں شرکت کرنے والوں کے ساتھ ساتھ دیگر شہریوں کی جان و مال کی سلامتی کو بھی یقینی بنایا جائے۔ وزیر داخلہ اور آئی جی کی ہدایات کے بعد کراچی پولیس نے سیکورٹی پلان کو مختلف سیکورٹی سیکٹرز میں تقسیم کیا ہے اور ہر سیکٹر میں ایس پی رینک کے پولیس افسر کو نگراں بنایا جائے گا جبکہ ہر ایک سیکورٹی سیکٹر کو سب سیکٹر میں تقسیم کر کے ایس ڈی پی اوز کو ذمہ داریاں تفویض کی گئی ہیں کہ سیکورٹی اہلکاروں سے مستقل روابط میں رہیں گے۔ کراچی پولیس کے مطاق سیکورٹی اقدامات کے تحت پولیس افسران اور جوانوں کے علاوہ پولیس کمانڈوز بھی فرائض انجام دے رہے ہیں۔ مرکزی جلوس کی گزر گاہوں پر 200 سے زائد منتخب کردہ بلند عمارتوں پر روف ٹاپ ڈپلائنٹ کے ساتھ ساتھ نشتر پارک کے اطرف میں واچ ٹاورز سے نگرانی کے عمل کو موٴثر بنایا جا رہا ہے۔ علاوہ ازیں جلوسوں / مجالس کی لمحہ بہ لمحہ مانٹیرنگ کے لیے پولیس ہیڈ آفس میں قائم ٹریفک کنٹرول روم سوک سینٹر کراچی میں قائم سی سی ٹی وی کنٹرول روم اور نشتر پارک میں قائم کنٹرول روم نشتر پارک و ملحقہ علاقوں سے لے کر حسینیہ ایرانیان تک مانٹیرنگ میں مصروف عمل ہیں۔ دریں اثناء ٹریفک پولیس کے مطابق جیسے ہی جلوس نشتر پارک سے روانہ ہوگا شہر کی جانب سے آنے والی تمام ٹریفک کو سولجر بازار (بہادر یار جنگ روڈ) کی جانب ایم اے جناح روڈ، ڈاکٹر داؤد پوتہ روڈ کراسنگ سے موڑ دیا جائے گا۔ وہ تمام ٹریفک جو سولجر بازار روڈ اور اس کے جنکشن ڈاکٹر داؤد پوتہ روڈ سے اس کے جنکشن خان بہادر نقی محمد خان روڈ انہیں یکطرفہ چلایا جائے گا۔ وہ تمام بسیں، منی بسیں اور ٹرک وغیرہ جو کہ ناظم آباد کی جانب سے آ رہی ہیں انہیں نشتر روڈ، گارڈن سے ڈائیورٹ کیا جائے گا تاکہ وہ اپنی منزل مقصود تک پہنچ سکیں۔ تمام بسیں، منی سیں اور ٹرک وغیرہ جو کہ لیاقت آباد کی جانب شہر کی طرف آ رہی ہوں گی انہیں تین ہٹی چوک سے مارٹن روڈ پر جیل روڈ کی طرف موڑ دیا جائے گا، ان تمام گاڑیوں کو جیل چورنگی تک جانے کی اجازت ہوگی اور یہ تمام گاڑیاں جیل روڈ سے ہوتی ہوئی جمشید روڈ، دادا بھائی نور جی روڈ، کشمیر روڈ، شاہراہ قائدین، شاہراہ فیصل، مبارک شہید روڈ، اقبال شہید روڈ، لکی اسٹار، سرور شہید روڈ، ڈاکٹر داؤد پوتہ روڈ، پریڈی اسٹریٹ سے ہوتی ہوئی اپنے روٹ پر چلی جائیں گی۔ جب جلوس کا اگلا سرا ایم اے جناح روڈ جنکشن، منسفیلڈ اسٹریٹ پر پہنچے گا تو ان گاڑیوں کو سیدھا ای ایم ای 602 ورکشاپ، مبارک شہید روڈ، اقبال شہید روڈ، لکی اسٹار، سرور شہید روڈ، فاطمہ جناح روڈ، مولانا دین محمد وفائی روڈ (اولڈ اسٹریچن روڈ)، ڈاکٹر ضیاء الدین احمد روڈ اور آئی آئی چندریگر روڈ کی طرف موڑ دیا جائے گا۔ اسی طرح وہ تمام بسیں، منی بسیں جو کہ اسٹیڈیم روڈ کی جانب سے شہر کی طرف جائیں گی انہیں نیو ایم اے جناح روڈ کی جانب سے آنے کی اجازت ہوگی۔ البتہ یہ گاڑیاں دادا بھائی نور جی روڈ، کشمیر روڈ اور اس کے جنکشن سے ہوتے ہوئی براستہ شاہراہ قائدین سے شارع فیصل پر پہنچیں گی۔ وہ تمام بسیں، منی بسیں اور ٹرک وغیرہ جو کہ سپر ہائی وے، گلبرگ کی جانب سے شہر کی طرف جائیں گی انہیں لیاقت آباد نمبر 10 سے ناظم آباد چورنگی نمبر 2 کی طرف موڑ دیا جائے گا جو براستہ حبیب بینک چوک، اسٹیٹ ایونیو روڈ، شیرشاہ سے ماڑی پور تک جائے گی اور اسی طرح واپسی کے لیے یہی راستہ اختیار کیا جائے گا۔ وہ تمام بسیں، منی بسیں اور ٹرک وغیرہ جو کہ نیشنل ہائی وے کی جانب سے شہر کی طرف جائیں گی انہیں براستہ راشد منہاس روڈ، اسٹیڈیم روڈ، سر شاہ سلیمان روڈ، حسن اسکوائر، لیاقت آباد نمبر 10، ناظم آباد چورنگی نمبر 2، حبیب بینک چوک، اسٹیٹ ایونیو روڈ، شیر شاہ سے ماڑی پور تک آنے کی اجازت ہوگی اور اسی طرح واپسی کے لیے یہی راستہ اختیار کیا جائے گا۔ تمام قسم کی چھوٹی یا بڑی ٹریفک کو گرومندر چوک سے آگے جلوس کے روٹ پر جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ اس تمام ٹریفک کو بہادر یار جنگ روڈ اور خان بہادر نقی محمد خان روڈ پر موڑ دیا جائے گا۔ البتہ یہ ٹریفک سولجر بازار روڈ اور خان بہادر نقی محمد خان روڈ، بہادر یار جنگ کراسنگ تک جا سکیں گی۔ تمام قسم کی چھوٹی ٹریفک جو کہ مزار قائد کی طرف سے براستہ ایم اے جناح روڈ کی جانب سے آ رہی ہو گی اس تمام ٹریفک کو بہادر یار جنگ روڈ پر موڑ دیا جائے گا اور کسی بھی ٹریفک کو کسی بھی حالت میں پرانی نمائش چوک کی جانب جانے کی اجازت نہ ہوگی۔ تمام قسم کی ٹریفک جو کہ براستہ شاہراہ قائدین سے نمائش چوک کی جانب جائے گی ان کو سوسائٹی چورنگی سے آگے جانے کی اجازت نہیں ہوگی، سوائے ان گاڑیوں کے جن کے ونڈ اسکرین پر جلوس میں شامل ہونے کا اسٹیکر چسپاں ہوگا جو اس دفتر سے جاری کیا جائے گا۔ کسی ٹرک، بس، منی بس کو اس چورنگی سے آگے نمائش چوک کی طرف جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ جب جلوس کا پہلا سرا ایم اے جناح روڈ، میسنفلڈ اسٹریٹ پر پہنچے گا تو تمام ٹریفک جو صدر اور دوسری کالونیوں کی طرف جانا چاہے گی اس کو ایمپریس مارکیٹ کی طرف ذیل چوراہوں سے آگے جانے کی اجازت نہیں ہوگی۔ پریڈی اسٹریٹ/ سرمد روڈ، پریڈی اسٹریٹ / ایم اے جناح روڈ۔ شاہراہ لیاقت / کورٹ روڈ اور شاہراہ لیاقت/ محمد بن قاسم روڈ۔ اسی طرح تمام ٹریفک کو صدرکی جانب براستہ ایم اے جناح روڈ کی جانب سے پریڈی اسٹریٹ، آغا خان روڈ کراسنگ سے آنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ کسی بھی ٹریفک کو ایم اے جناح روڈ اور اس کے جنکشن پریڈی اسٹریٹ سے جانے کی اجازت نہیں ہوگی جب تک جلوس مکمل طور پر اس چوک سے گزر نہیں جاتا۔ تمام ٹریفک جو آغا خان روڈ، گارڈن کی جانب سے آ رہی ہے انہیں ایم اے جناح روڈ، آغا خان روڈ جنکشن سے آنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ تمام بسوں، منی بسوں اور دیگر ہیوی گاڑیوں کی منتقلی کو ایڈوانس میں ہی شروع کر دیا جائے گا، جیسے ہی چھوٹی ٹریفک کو جلوس کی جانب ڈائیورٹ کرنا شروع کیا جائے گا جبکہ کسی بھی گاڑی کو جلوس کے روٹ پر گاڑی کھڑی کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔ 

Comments are closed.