ملک اسحاق کو چہلم امام حسین علیہ السلام کے فورا بعد رہا کیا جا رہا ہے

Posted: 10/01/2012 in All News, Breaking News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

ہم وثوق سے کہہ سکتے ہیں کہ حضرت امام حسین علیہ السلام کے چہلم کے فوراً بعد انسانیت کے دشمن ملک اسحاق کو رہا کردیا جائے گا جس کے بعد ملک میں امن و امان کے خاتمے اور دہشت گردی میں اضافے کی جو حالت سامنے آئے گی وہ ناقابل تصور ہے۔  ملتان۔ ۷ جنوری ۲۰۱۲ء ( ) شیعہ علماء کونسل صوبہ پنجاب کے نائب صدر چوہدری فدا حسین گھلوی نے کہا ہے کہ معروف دہشت گردگروہ لشکر جھنگوی کے سربراہ اور سینکڑوں پاکستانی عوام کے قاتل ملک اسحاق کو عارضی نظر بندی کی شکل میں دئیے گئے تحفظ کا اب اختتام کیا جارہا ہے اور ملک اسحاق کی رہائی کے تانے تانے بنے جارہے ہیں۔ ہم وثوق سے کہہ سکتے ہیں کہ حضرت امام حسین علیہ السلام کے چہلم کے فوراً بعد انسانیت کے دشمن ملک اسحاق کو رہا کردیا جائے گا جس کے بعد ملک میں امن و امان کے خاتمے اور دہشت گردی میں اضافے کی جو حالت سامنے آئے گی وہ ناقابل تصور ہے۔ چوہدری فدا حسین گھلوی نے کہا کہ ہمیں معلوم ہوا ہے کہ ملک اسحاق کی رہائی کی تیاریاں مکمل کر لی گئی ہیں اور اس تسلسل میں اُسے ڈبل کیبن ویگو گاڑی بھی اس کے ہمدردوں اور بہی خواہوں کی طرف سے تحفے میں دے دی گئی جبکہ اُس کی سرگرمیاں بھی نئے سرے سے طے کر لی گئی ہیں۔ اس مرتبہ پہلے کی نسبت زیادہ شدت اور طاقت سے دہشت گرد گروہ کو فعال اور متحرک کیا جائے گا۔ ان تمام خطرات اور اعلانات کے باوجود وفاقی حکومت اور پنجاب حکومت غفلت کی نیند سورہی ہے اور دانستہ طور پر اقدامات نہیں کررہی ہے۔ ہم متنبہ کرنا چاہتے ہیں کہ اگر وفاقی اور صوبائی حکومتوں نے ہوش کے ناخن نہ لئے اور دہشت گرد کروہ کے سرغنے کو رہا کردیا تو حالات کی تمام تر ذمہ داری حکمرانوں پر ہوگی اور لشکر جھنگوی کے ہاتھوں موت کی وادی میں جانے والے پاکستانی عوام کا خون حکمرانوں کی گردن پر ہوگا۔ شیعہ علما کونسل پنجاب کے نائب صدر نے مزید کہا کہ اب پاکستانی عوام سمیت دنیا کے تمام لوگوں پر واضح ہوچکا ہے کہ پاکستان میں فرقہ وارانہ فسادات اور فرقہ وارانہ دہشت گردی کے موجب اور بانی لشکر جھنگوی اور اس کے سرپرست ہیں لیکن سیاسی رہنما ‘ حکمران اور ادارے اس گروہ کے ساتھ مفاہمت اور رعایت کی پالیسی اپنا رہے ہیں جو ملک کے لیے خودکشی کے مترادف ہے۔ اگر ان ملک دشمنوں اور انسانیت کے قاتلوں کو لگام دینے کے لیے قانون کا آہنی شکنجہ استعمال نہ کیا گیا تو پاکستانی عوام اسی طرح خون میں نہاتے رہیں گے اور ملک کی بدنامی پوری دنیا میں ہوتی رہے گی۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ ملک اسحاق کو آزاد کرکے ملک میں امن وامان کی تباہی کے اسباب پیدا نہ کئے جائیں بلکہ لشکر جھنگوی کے تمام مفرور دہشت گردوں کو گرفتار کیا جائے اور گرفتار دہشت گردوں کو سرعام تختہ دار پر لٹکایا جائے تاکہ وطن عزیز میں امن و سکون کا ماحول قائم ہو اور پاکستان کے نام پرامن ممالک میں شامل ہو۔

Comments are closed.