ڈاکٹر جمال شاہ کے قاتلوں کو جلد گرفتار نہ کیا گیا تو پشاور میں بھی کراچی طرز کا تاریخی دھرنا دیا جائے گا

Posted: 09/01/2012 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

ڈاکٹر سید جمال شاہ کے قتل کیخلاف شیعه تنظیموں کے زیر اہتمام احتجاجی ریلی نکالی گئی، جس میں علماء کرام، قبائلی عمائدین اور طلباء نے بڑی تعداد میں شرکت کی،اس موقع پر شرکاء بینرز اور کتبے اٹھائے نعرہ بازی کرتے پریس کلب کے سامنے پہنچے، جہاں شیعہ عالم دین اور سابق سینیٹر علامہ جواد ہادی، علامہ جمیل حسین، طوری بنگش سپریم کونسل کے چیئرمین حاجی گلاب حسین طوری،ثاقب بنگش اور شیعہ علماء کونسل پشاور کے صدر مظفر علی اخونزادہ نے خطاب کیامقرین نے  ڈاکٹر سید جمال شاہ کے بیہمانہ قتل کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے قاتلوں کی فوری گرفتاری کا مطالبہ کیا۔  مقررین کا کہنا تھا کہ حکومت ڈاکٹر جمال کے قتل میں ملوث افراد سمیت فرقہ وارانہ دہشتگردی کے دیگر واقعات میں ملوث گروہوں کو میڈیا کے سامنے لائے، اور فوری طور پر سزا جزا کا قانون عملی طور پر نافذ کرے ، انہوں نے کہا کہ اہل تشیع کا مزید قتل عام برداشت نہیں کرینگے، چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس افتخار محمد چوہدری مختلف واقعات پر از خود نوٹس لیتے ہیں لیکن انہیں ملت تشیع کی نسل کشی نظر نہیں آتی، مقررین نے مطالبہ کیا کہ چیف جسٹس اس حوالے سے فوری طور پر سوموٹو ایکشن لیں، اس موقع پر ایک قرار داد بھی منظور کی گئی، جس میں کہا گیا کہ اگر ڈاکٹر جمال شاہ کے قاتلوں کو جلد گرفتار نہ کیا گیا تو پشاور میں بھی کراچی طرز کا تاریخی دھرنا دیا جائے گا۔واضح رہے کہ پارا چنار سے تعلق رکھنے والے معروف کارڈیالوجسٹ ڈاکٹر سید محمد جمال شاہ کو دو ماہ قبل حیات آباد پشاور سے اغواء کیا گیا تھا، گذشتہ مغوی ڈاکٹر کی نعش خیبر ایجنسی جمرود کے علاقے ٹیڈی بازار سے برآمد ہوئی-

Comments are closed.