کراچی میں کامیاب دهرنے کا بدله – شیعہ علماء سے پولیس گارڈز واپس لے لئے گئے

Posted: 05/01/2012 in All News, Breaking News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

کراچی میں پولیس انتظامیہ نے متعصبانہ کاروائی کرتے ہوئے شہر بھر میں شیعہ علماء کرام اور اکابرین ملت کی سیکورٹی پر معمور تمام پولیس اہلکاروں کو ہیڈ کوارٹر طلب کر لیا ہے ۔گذشتہ دنوں شیعہ رہنما شہید عسکری رضا کی شهادت کے بعد شرپسند دہشت گردوں کے سرپرست سی آئی ڈی پولیس آفیسر چوہدری اسلم کے خلاف احتجاج سمیت گورنر ہاؤس سندھ پر ١٠ گھنٹے تک جاری رہنے والے تاریخی دھرنے کے بعد ان پر مقدمہ قائم ہونے کے بعد آئی جی سندھ پولیس نے متعصبانہ انتقامی کاروائی کا نشانہ بناتے ہوئے مختلف بهانے بنا کر شیعہ علماء و زاکرین سے پولیس سیکورٹی ختم کرنے کے احکامات جاری کر دئیے ہیں جبکہ تمام پولیس اہلکاروں کو فوری طور پر ہیڈ کوارٹر میں رپورٹ کرنے کا حکم دیا ہے ۔ واضح رہے کہ شہر کراچی میں شرپسند دہشت گردوں نے ایک طویل عرصہ سے شیعہ نوجوانوں اور رہنماؤں کی ٹارگٹ کلنگ کا سلسلہ شروع کیا ہوا ہے جسے نہ صرف ریاستی سرپرستی حاصل ہے بلکہ موثق شواهدکی بنا پر پولیس انتظامیہ کی سرپرستی بھی حاصل ہے ،جس کا واضح ثبوت شہید عسکری رضا کی شہادت میں ایس ایس پی سی آئی ڈی پولیس چوہدری اسلم کا ملوث ہونا اور شہادت سے قبل شہید عسکری رضا کو کالعدم دہشت گرد گروہ کے شرپسند دہشت گردوں کے ہاتھوں قتل کروانے کی دھمکیاں دینا ہیں۔ قابل غور ہے یہ بات کہ جہاں ملک بھر میں شیعہ عمائدین کی ٹارگٹ کلنگ کی جا رہی ہے وہاں پولیس انتظامیہ اور ریاستی عناصر دہشت گردوں کی سرپرستی میں مصروف عمل ہیں جبکہ ملت جعفریہ کو احتجاج کرنے اور اپنا حق حاصل کرنے پر انتقامی کاروائیوں کا نتیجہ بنایا جا رہا ہے جس کا ثبوت گذشتہ روز آئی جی سند ھ پولیس کے یہ احکامات ہیں کہ جن کے نتیجہ میں تمام شیعہ علمائے کرام،زاکرین عظام سے سیکورٹی گارڈز ہٹا لئے گئے ہیں تا کہ ناصبی وہابی دہشت گردوں کو ٹارگٹ کلنگ کے لئے آسان راستہ فراہم کیا جائے۔

Comments are closed.