Archive for 01/01/2012

مشین ریڈبل پاسپورٹ کی نارمل فیس 2100 سے بڑھا کر 3300 جبکہ ارجنٹ فیس 4000 روپے سے بڑھا کر 5000 کر دی گئی ہے، اسی طرح گھریلو اور کمرشل صارفین کیلئے گیس 13.98فیصد اور صنعتوں کےلئے 16.97 فیصد مہنگی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے۔ آئل اینڈ گیس ریگو لیٹری اتھارٹی (اوگرا ) نے گھریلو اور کمرشل صارفین کیلئے گیس 13.98 فیصد اور صنعتوں کے لئے 16.97 فیصد مہنگی کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے، جبکہ سی این جی کی قیمتوں میں 8 روپے فی کلو گرام اضافہ کر دیا گیا ہے۔ نئی قیمتوں کا اطلاق یکم جنوری سے ہو گا۔ صنعتی شعبے کے لیے گیس کی قیمت میں 16.97 فیصد اضافہ کیا گیا ہے جس میں 13روپے فی ایم ایم بی ٹی یو گیس ڈویلپمنٹ سرچارج بھی شامل ہے۔ واپڈا اور کے ایس سی کے لیے گیس 13.58 فیصد مہنگی کی گئی ہے، جس میں27 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو سرچار ج شامل ہے۔ نجی بجلی گھروں کے لیے گیس کی قیمت میں 34.57 فیصد اضافہ کیا گیا ہے، جس میں فی ایم ایم بی ٹی یو 70 روپے سے چارج شامل ہے۔ سی این جی سیکٹر کے لئے بھی قیمتوں میں اضافہ کی منظوری دیدی گئی ہے جس کے مطابق بلوچستان، پوٹھوہار ریجن اور خیبر پختونخوا میں سی این جی سیکٹر کے لیے گیس 38.63 فیصد مہنگی کی گئی ہے جس میں 141 روپے فی ایم ایم بی ٹی یو سرچارج شامل ہے۔ سندھ اور پنجاب میں سی این جی سیکٹر کے لیے گیس 27.79 فیصد مہنگی کی گئی ہے جس میں 79روپے فی ایم ایم بی ٹی یو سرچارج شامل ہے۔ اس کے علاوہ مشین ریڈبل پاسپورٹ کی نارمل فیس 2100 سے بڑھا کر 3300 جب کہ ارجنٹ فیس 4000 روپے سے بڑھا کر 5000 کر دیا گیا ہے۔

Advertisements

پاسبان اعزا کے سربراہ ایس ایم حیدر نے پریس ریلیز میں کہا کہ عسکری رضا کی شہادت ملت جعفریہ کیلئے بہت بڑا سانحہ ہے۔ ہم ایک عظیم کارکن سے محروم ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عسکری رضا کا مشن جاری رہے گا۔کراچی کے علاقے نیپا چورنگی کے قریب فائرنگ سے پاسبان عزا جعفریہ الائنس کے رہنما عسکری رضا جاں بحق ہو گئے۔ پولیس کے مطابق عسکری رضا اپنے ساتھی علی مہدی کے ہمراہ کار میں جا رہے تھے کہ موٹر سائیکل پر سوار ملزمان نے نیپا چورنگی کے قریب ان پر فائرنگ کر دی، جس سے دونوں زخمی ہو گئے، انہیں آغا خان اسپتال پہنچایا گیا، جہاں عسکری رضا دوران علاج دم توڑ گئے۔ اس دوران اسپتال کے باہر جمع کارکنوں نے حکومت کے خلاف نعرے بازی کی، پولیس اور رینجرز کی سخت سکیورٹی میں عسکری رضا کی میت کو انچولی پہنچا دیا گیا ہے۔ دیگر ذرائع کے مطابق گلشن اقبال میں ہفتے کی شام کار پر فائرنگ کے نتیجے میں شدید زخمی ہونے والا عسکری رضا نجی اسپتال میں دوران علاج زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے جاں بحق ہو گیا، جسکی لاش پولیس نے ضابطے کی کارروائی کے بعد ورثاء کے حوالے کر دی۔ ذرائع کے مطابق جاں بحق ہونے والے رہنما لشکر جھنگوی کی ہٹ لسٹ پر تھے، ان کو سرجانی ٹائون می قتل کے ایک جعلی مقدمے میں نامزد کروایا گیا جس کے بعد وہ عدم ثبوت کی بنا پر رہا ہو گئے۔ پولیس کے مطابق عسکری رضا کی ہلاکت کی اطلاع پر رضویہ سوسائٹی، ملیر جعفر طیار سوسائٹی، انچولی سوسائٹی اور دیگر علاقوں میں کشیدگی پھیل گئی۔ واضح رہے کہ کار پر فائرنگ کے واقعے میں عسکری رضا کے ہمراہ علی مہدی زخمی ہوا تھا جو نجی اسپتال میں زیر علاج ہے، ذرائع کے مطابق عسکری رضا کے ساتھی کی فائرنگ سے ایک دہشت گرد بھی زخمی ہوا ہے۔ گلشن اقبال پولیس نے کار پر فائرنگ کرنے والے ملزم ہونے کے شبے میں شہر کے اسپتالوں میں زیر علاج فائرنگ کے زخمی افراد سے پوچھ گچھ شروع کر دی ہے۔ پولیس نے عباسی شہید اسپتال سے فائرنگ کے زخمی دانش کو حراست میں لے لیا۔ مذکورہ نوجوان ڈکیتی کے دوران مزاحمت پر زخمی ہوا تھا جبکہ پولیس کی بھاری نفری نے سول اسپتال میں پیپر مارکیٹ میں فائرنگ سے زخمی ہونے والے عمران ولد اسماعیل کو بھی گھیر لیا اور اس سے ایک گھنٹے سے زائد پوچھ گچھ کے بعد پولیس ناکام واپس چلی گئی۔ دریں اثناء پاسبان اعزا کے سربراہ ایس ایم حیدر نے پریس ریلیز میں کہا کہ عسکری رضا کی شہادت ملت جعفریہ کیلئے بہت بڑا سانحہ ہے۔ ہم ایک عظیم کارکن سے محروم ہو گئے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ عسکری رضا کا مشن جاری رہے گا۔

قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے گلشن اقبال کراچی میں ممتاز شیعہ مذہبی و سماجی شخصیت عسکری رضا کی دہشت گردوں کی ہاتھوں شہادت اور انکے ساتھی کے شدید زخمی ہونے پرشدید غم و غصے کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ یکم محرم الحرام سے اب تک فقط کراچی میں بیس کے قریب معصوم اور بے گناہ انسانوں کی شہادت سے واضح ہوتا ہے کہ ریاست کے ذمہ دار اور عوام کے جان و مال کے تحفظ کے ضامن ادارے اپنی ذمہ داریوں سے غفلت کے مرتکب ہورہے ہیں اور ٹارگٹ کلنگ کا یہ سلسلہ وقفے وقفے سے جاری ہے ۔ صورتحال کی سنگینی کے ادراک سے چشم پوشی سے ملک کی داخلی سلامتی کو ناقابل تلافی نقصان پہنچنے کااحتمال ہے۔انہوںنے شہید عسکری رضا کے لواحقین و پسماندگان سے دلی دکھ اور ہمدردی کا بھی اظہار کیا۔

شیعہ علماء کونسل خیبر پختونخوا کے صدر علامہ رمضان توقیر نے ملک بھر میں بجلی اور گیس کی طویل ترین لوڈشیڈنگ پر تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ  حکومت امریکی دبائو کو مسترد کرتے ہوئے فوری طور پر ایران سے بجلی اور گیس کا حصول ممکن بنائے، ایس یو سی کے صوبائی دفتر سے جاری کردہ بیان میں ان کا کہنا تھا کہ ملک بھر میں گیس اور بجلی کی طویل ترین بندش کی وجہ سے غریب عوام کے چولہے ٹھنڈے پڑ چکے ہیں، اکثر کاروبار ٹھپ ہو چکے ہیں جس کے باعث لوگوں کی معاشی حالت روز بروز بدتر ہو رہی ہے،لیکن حکومت کو کوئی فکر نہیں۔  انہوں نے پشاور میں متعین ایرانی قونصل جنرل حسن درویش وند کی جانب سے پاکستان کو 5000 ہزار میگاواٹ تک بجلی فراہمی کی پیشکش کو خوش آئند قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ برادر اسلامی ملک کی جانب سے یہ پیشکش پاکستان میں بجلی بحران پرقابو پانے کا سنہری موقع ہے،اور اس موقع سے جتنی جلدی ممکن ہو استفادہ کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ حکومت فوری طور پر پاک ایران گیس پائپ لائن معاہدے کو حتمی شکل دے، اس حوالے سے امریکی دبائو کسی صورت قبول نہ کیا جائے بلکہ قوم کی امنگوں کے مطابق ملک کے مفادات کو مدنظر رکھتے ہوئے فیصلے ہونے چاہیں۔ علامہ رمضان توقیر نے مزیدکہا کہ پاکستان اور ایران کے عوام دوستی کے مضبوط بندھن میں بندھے ہوئے ہیں اور گیس پائپ لائن معاہدہ کو حتمی شکل دیکر دوستی کے اس رشتے کو مزید مستحکم کیا جا سکتا ہے، انہوں نے کہا کہ یہ صرف گیس پائپ لائن نہیں بلکہ دوستی کی لائن ہے، لہٰذا حکمران ملک کو بجلی اور گیس کے بحران سے نکالنے کیلئے فوری طور پر اقدامات کریں۔

یہ دہشت گردی پہلی محرم سے ہو رہی ہے اورسب کو معلوم ہے کہ یہ دہشت گردعناصرکون ہیں اورکہاں سے ان کی پشت پناہی ہوتی ہے ان کی دشمنی کسی تنظیم سے نہیں یہ سماج کے دشمن ہیں .عسکری رضا کو اس لئےشہید کیا گیا چونکہ یہ سماجی اور مومنین کا خادم تهے.ان خیالات کااظہارشیعہ علما کونسل پاکستان کراچی کے صدرعلامہ علی محمد نقوی نے انچولی میں شہید عسکری رضاکے جنازے میں میڈیا سے گفتگو کرنے ہوئے کیا انہوں نے  مزید کہا کہ ان(دہشت گردوں) سے تو میڈیا لوگوں کی لسٹ برآمد پوئی پے وه میڈیا لوگوں کو بهی معاف نہیں کریں گے اگرعسکری رضاکوکسی تنظیمی بنیادپر شہید کیا گیا تو محرم میں شہید ہونے  والے  اسکاوٹس کا کس تنظیم سے تعلق تها یہ سب کچھ پلاننگ اور منصوبے کے تحت ہورہاہے ان(دہشت گردوں) کے پاس لسٹیں ہیں ،دهمکیاں دی جاتی ہیں کئی بارعسکری رضا کودهمکیاں دی جاتی رہیں.ہم نے ہمیشہ انتظامیہ کو متوجہ کیا مگرایسامحسوس ہوتا ہے کہ انتظامیہ پریشرمیں ہے .ہم پاکستان میں مشکل اورضرورت کے وقت جب چاہیں اف.آئی.آردرج کراسکتے ہیں یہ ہمارا قانونی حق ہے مگرایس ایچ او سے لیکر ڈی.آے .جی تک سب کے ساتھ رابطے میں ہوں ٹال مٹول سے کام لیا جارہاہے اف.آئی.آرز درج نہیں کی جارہیں کل ہم نے مل کرایک احتجاج رکهاتهامجهے لگتا ہے یہ اسی احتجاج کا نتیجہ ہے مگرہم ڈرنے اور پیچهے هٹنے والے نہیں کب تک ہمارے صبرکا امتحان لیا جائے گاپہلی محرم سے اس وقت تک 20مومنین شہید کئے جاچکے ہیں آخرکب تک ہمارا قتل ہوتا رہے گا اگرہم نے اپنے جوانوں کواجازت دے دی توپاکستان کے گلی کوچوں کی رنگت تبدیل ہوجا ئےگی-

شہید عسکری رضاکی جنازه نماز میں ہزاروں سوگوروں نے شرکت کی شیعہ علما کونسل پاکستان کے رہنما علامہ ناظر عبّاس تقوی، علامہ علی محممد نقوی کا انچولی میں شہید کے جنازے کی آمد پر میڈیا سے گفتگو کرنے ہوئے ٣ روز سوگ کا اعلان کیاجعفریہ پریس کے نمائندے کے مطابق کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں نیپا چورنگی کے مقام پر شرپسند دہشت گردوں کی فائرنگ سے شیعہ رہنما اور علامہ حسن  ترابی کے وقت کے لیگل ایڈوایذر عسکری رضا شہید اور علی شدید زخمی ہو گئے تھے .جس پر شیعہ علما کونسل پاکستان کی رینما علامہ باقر نجفی ،علامہ جعفر سبحانی ،علما ناظر عبّاس تقوی ،علامہ علی محممد نقوی نے ٣ روز سوگ کا اعلان کیا ان کا کہنا تھا کے ایک بار پھر خفیہ ہاتھ فرقہ واریت پھیلانے کے در پے ہیں ،خیرپور ،میرپور خاص اور اب  پھر کراچی کا رخ کیا ہے ،یہ  بات بہت تشویش ناک ہے شیعہ علما کونسل شدید الفاظ میں مذمت کرتی ہے اورحکام سے مطالبہ کرتی ہے کہ ان ملک وملت دشمن عناصرکی فی الفور روک تهام کرے،دوسری صورت میں ہرقسم کے حالات کی ذمہ خودحکومت پرعائد ہوگی

نوحہ خواں آل محمد علیہ السلام جناب سید ندیم رضا سرور کی والدہ ماجدہ سیدہ نرجس خاتوں بنت سید ظہور الحسن نقوی زوجہ سید اسرار حسین (مرحوم) کے سوئم کے کا انعقاد بتاریخ یکم جنوری 2012 بروز اتوار بوقت 4:00بجے سہ پہر بمقام مسجد و امام بارگاہ خیرالعمل ، بلاک 20، انچولی سوسائٹی، کراچی، پاکستان میں منعقد ہو گا جس میں سوز و مرثیہ جناب حشمت حسین زیدی و ہمنوا، سلام جناب ریحان اعظمٰی اور رضا شاہ، اور خطابت جناب حجت الاسلام مولان سید رضی جعفر نقوی صاحب کریں گے۔ مرحومہ سیدہ نرجس خاتوں کے سوگواران میں وسیم افسر، ندیم رضا سرور، ریحان رضوی، عدنان رضوی و دیگر عزیزو اقارب کی طرف تمام مومنین اور مومنات سے شرکت کی استداء ہے۔ اس سائحہ عظیم پر کنزاہ نیوز انٹرنیشنل(اردو) اپنی تمام ٹیم اور کنزاہ نیوز انٹرنیشنل(اردو) اپنے تمام دنیا میں پھیلے ہوئے صارفین کی طرف سے مرحومہ سیدہ نرجس خاتوں بنت سید ظہور الحسن نقوی زوجہ سید اسرار حسین (مرحوم) کے تمام خانوادے و دیگر عزیز واقارب سے اور خاص کر ان کے ہونہار فرزند، شہنشائے لہن و سخن، نوحہ خوانے آل محمد علیہ السلام, جناب سید ندیم رضا سرور سے دل کی گہرائیوں اور تمام خلوص اور محبت کے ساتھ کنزاہ نیوز انٹرنیشنل(اردو) تعزیت پیش کرتی ہے اور دعا گوء ہےکہ اللہ تبارک و تعالی مرحومہ کے تمام اہلخانہ، لواحقین، عزیز واقاربہ کو صبر جمیل عطا فرمائےنیز مرحومہ کو جوارے معصومیں علیہ السلام میں آباد کرتے ہوئے جوارے سیدہ کونین، جناب بی بی زھراہ سلام اللہ علیھا میں مرحومہ کو خاص قربت عنایت فرمائیں کیونکہ مرحومہ نوحہ خوانے آل محمد علیہ السلام کی والدہ ماجدہ ہیں انشااللہ آمیں  

قائد ملت جعفریہ پاکستان علامہ سید ساجد علی نقوی نے سال 2012  کے آغاز پر اپنے خصوصی پیغام میں کہا ہے کہ سال گذشتہ بھی ارض پاک کے باسیوں کے لئے ناامیدی’ عدم تحفظ’ بے چارگی’ غربت’ افلاس’ پسماندگی اور ذہنی اذیتوں کے سوا کچھ نہ دے پایا۔ خود کش حملوں’ بم دھماکوں’ ٹارگٹ کلنگز اور فتنہ انگیزی جیسے  مسائل کے گرداب اور مشکلات کے نرغے میں گھرے مجبو ر و بے بس عوام اپنے دکھوں کے مداوے کے لئے کسی مسیحا کے منتظر دکھائی دیئے۔ غم و اندوہ میں ڈوبے اور حسرت و یاس کی تصویر بنے یہ سوال کرتے دکھائی دیتے ہیں کہ آخر کس وقت پاک سرزمین سے بدامنی و دہشت گردی’ قتل و غارتگری و فتنہ و فساد’ مہنگائی و غربت’ بے روزگاری ‘ بجلی و گیس کی لوڈشیڈنگ کے عذاب کا خاتمہ ہوگا اور لاتعداد مسائل میں گھرے عوام اور خاندان خط غربت سے بھی نیچے گزاری جانے والی دردناک زندگی سے آزادی سے حاصل کریں گے۔ملک کی آزادی’ خود مختاری ‘ سالمیت کے دفاع کے لئے عوام کی امنگوں کے مطابق اور نظریہ پاکستان کی اساس کی روشنی میں پالیسیاں مرتب کی جائیں گی اور بیرونی مداخلت کے خاتمے اور استعماری طاقتوں کے چنگل سے نجات حاصل کی جاسکے گی۔ان کی امیدوں کی برآوری ‘ ان کی مشکلات کے خاتمے اور ملک کی ترقی و خوشحالی کی نوید لئے سورج کب طلوع ہوگا؟ علامہ ساجد نقوی نے مزید کہا کہ رسم دنیا ہے کہ جب نئے سال کا آغاز ہوتا ہے تو ہر ملک کے حکمران’ ہر سیاسی و دینی جماعت کے قائدین’ تمام سماجی و انسانی حقوق کی تنظیموں کے ذمہ داران اور مختلف شعبہ ہائے حیات سے متعلق افراد تجدید عہد کے بیانات جاری کرتے ہیں کہ گذشتہ سال ہونے والی کوتاہیوں اور غلطیوں سے سبق حاصل کرتے ہوئے آئندہ سال احتیاط کریں گے لیکن جب سال کا اختتام ہوتا ہے تو صورت حال پہلے سے بھی بدتر ہوتی ہے۔ وطن عزیز گذشتہ سال بھی متعدد بحرانوں کی زد میں رہا ہے جن میں سے ہمیشہ کی طرح دہشت گردی کا بحران سرفہرست رہا جس سے خاندان کے خاندان نگل لئے لیکن اس کے باوجود ریاست کے ذمہ داروں کی طرف سے ٹھوس اور سنجیدہ اقدامات نہیں ہوئے۔ نہ تو دہشت گردوں کے نیٹ ورک کو توڑا جاسکا’ نہ ہی بڑے بڑے سانحات کے پس پردہ حقائق منظر عام پر لائے گئے اسی طر ح دہشت گردوں کے سرپرستوں کو بھی نے نقاب نہ کیا گیا۔ قائد ملت جعفریہ پاکستان نے کہا کہ گذشتہ سال میں بھی امت مسلمہ کا وقار اور حیثیت مجرو ح رہی۔ عالم اسلام اس وقت نام نہاد سپرپاورز کا تختہ مشق بن چکا ہے نوبت یہاں تک پہنچ چکی ہے کہ اسلام جیسے آفاقی دین کو دہشت گردی اور انتہا پسندی کے ساتھ جوڑنے کی کوششیں جاری ہیں حالانکہ مسلمان دنیا بھر میں بڑی تعداد میں موجود ہیں۔ اسلامی سربراہی کانفرنس جیسا ادارہ بھی موجود ہے لیکن امت مسلمہ کی عظمت رفتہ کی بحالی کے اقدامات تشنہ تکمیل ہیں تاہم گذشتہ سال کے دوران یہ امر خوش آئند رہا کہ اسلامی بیداری کانفرنس کے ذریعہ امت مسلمہ کے مسائل و مشکلات پر قابو پانے کے لئے پیش رفت ہوئی۔

بلوچستان کے مذہبی سیاسی پارٹیوں کا اجلاس جمعیت کے صوبائی امیراسلامی نظریاتی کونسل کے چئیرمین سینیٹرمولانا محمد خان شیرانی کی صدارت میں مرکزی جمعیت اہل حدیث کے صوبائی دفتر میں ہوا جس میں جمعیت اہل حدیث کے صوبائی امیرحاجی مولانا علی محمدابوتراب، شیعہ علماء کونسل کے سربراہ علامہ مہدی نجفی ، جمعیت علماء پاکستان کے مرکزی ڈپٹی جنرل سیکرٹری عبدالقدوس ساسولی، جماعت اسلامی بلوچستان کے نائب امیرعبدالحق ہاشمی ، ایم ڈبلیو ایم کے  علامہ سید ہاشم موسوی شیعہ علماء کونسل کے جنرل سیکرٹری ظاہرشاہ ، جمعیت علماء اسلام بلوچستان کے نائب امیرحافظ حمداللہ شریک ہوئے اجلاس میں ملکی وصوبائی معاملات تفصیلی غورہوا اورملک میں جاری جید علماء طلباء اورمذہبی رہنماوں کی ٹارگٹ کلنگ پرتشویش کااظہارکرتے ہوئے ان واقعات کو مذہبی حلقوں کیخلاف ایک منظم سازش قراردیا گیا اجلاس میں تمام رہنماوں‌نے کہا کہ ہمیں اتنا بھی مظلوم نہیں بننا چاہیئے کہ دشمن ہمیں قتل بھی کرے اورہمارے درمیان غلط فہمیاں بھی پیدا کرکے ہمیں ہی آپس میں دست وگریباں کریں اجلاس میں طی ہوا کہ ان عناصرکے عزائم سے امت مسلمہ کوآگاہ کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے کیونکہ یہ قوتیں‌ ہمیں ٹیشوپیپرکی طرح استعمال کرتی ہیں اجلاس میں‌طے ہوا کہ تمام فرقوں اورمسلکوں کے درمیان مذہبی ہم آہنگی پیدا کرنا تمام مذہبی پارٹیوں کی قیادت کا اسلامی اوراخلاقی فریضہ ہے  اجلاس میں ان تمام خونی واقعات کو امت مسلمہ کے خلاف خطے میں جاری بین الااقوامی سازشوں کا حصہ قراردیا گیا کیونکہ یہ واقعات امت کوفرقوں میں تقسیم کرنے کیلئے ہورہے ہیں اجلاس میں طے ہوا کہ مذہبی بھائی چارے کے فروغ کیلئے اورغلط فہمیوں کودورکرنے کیلئے مذہبی پارٹیوں کے درمیان مستقل اورمنظم رابطوں کے سلسلے کومزید موثراورفعال بنانے کیلئے مشاورت کا دائرہ مزید وسیع کیا جائے گا جس کیلئے اجلاس میں موجود پارٹیاں مشاورت کے بعد تجاویزدینگی اجلاس میں پولیس سرجن ڈاکڑباقرشاہ کی المناک شہادت پرگہرے دکھ اورافسوس کا اظہارکرتے ہوئے کہا گیا کہ یہ واقعہ خروٹ آباد خیزی چوک کے واقعہ کے اصل حقائق کوچپھانے کیلئے کیاگیا اجلاس میں مطالبہ کیا گیا کہ واقعہ میں ملوث ملزمان کوبے بقاب کیا جائے اجلاس میں گزشتہ ماہ شہید ہونے والے علماء اورطلباء کیلئے دعامغفرت کی گئی.

سرینگر; اتحاد المسلمین کے صدر مولانا مسرور عباس انصاری نے اسکندر پورہ میں منعقد ہونے والی ایک مجلس حسینی ؑ سے خطاب کے دوران کہا ہے کہ کربلا کے شہیدوں کے آفاقی پیغام اور تحریک حسینیت کو کسی خاص مکتب یا فرقہ تک محدود نہیں کیا جاسکتا ہے کیونکہ پیغام کربلا ایک عالمگیر حیثیت رکھتا ہے اور جو بھی کوتاہ اندیش افراد حسینیت کو ایک خاص اور تنگ دائرے تک محدود رکھنا چاہتے ہیں وہ دراصل خود بھی اس عظیم پیغام سے ناواقف ہیں۔ جعفریہ پریس کی رپورٹ کے مطابق اسکندرپورہ میں مجلس حسینی ؑ کا انعقاد کیا گیا تھاجس میں ہزاروں عقیدت مندوں نے شرکت کی اور شہدائے کربلا کی عظیم الشان قربانیوں کو یاد کرتے ہوئے انہیں شاندار خراج عقیدت ادا کیا۔ اس موقعہ پر مولانا مسرور عباس نے مقامی آبادی خصوصاً اسکندرپورہ کے جوانوں کے جوش و جذبہ کو سراہتے ہوئے نظام ولایت کے تئیں ان کی عقیدت اور والہانہ وابستگی کو سلام پیش کیا اور امید ظاہر کی کہ ان جوانوں کی تقلید میں علاقہ کے دیگر دیہات کے پڑھے لکھے جوان بھی آگے آکر اسی جذبہ کو پروان چڑھائیں گے اور طاغوت وقت کے مقابلے میں نظام ولایت کو تقویت بخشیں گے۔

کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں نیپا چورنگی کے مقام پر کالعدم دہشتگرد گروہ سپاہ صحابہ اور لشکر جھنگوی کے ناصبی یزیدی دہشت گردوں کی فائرنگ سے شیعہ رہنما اور پاسبان عزاء کے سربراہ (لیگل ایڈوایذر) جناب عسکری رضااور علی شدید زخمی ہو گئے تھے۔جوکہ زخموں کی تاب نہ لاسکے اور سال 2011 کے آخری شہید ہونے کے  درجے پر فائز ہوئے رپورٹ کے مطابق ہفتے کی شام کو کراچی کے علاقے گلشن اقبال میں نیپا چورنگی کے مقام پر کالعدم دہشت گرد گروہ سپاہ صحابہ اور لشکر جھنگوی کے ناصبی وہابی یزیدی درندوں نے شیعہ رہنما عسکری رضا پر حملہ کر دیا جس کے نتیجہ میں عسکری رضا اورعلی شدید زخمی ہو گئے تھے۔اطلاعات کے مطابق عسکر ی رضا پر ناصبی یزیدی دہشت گردوں نے حملہ کیا تھا تاہم ان کو پٹیل اسپتال منتقل کیا گیا, آپریش اور بہتر علاج معالجے کی غرض سے آغا خان اسپتال منتقل کردیا گیا تھا شیعہ رہنما اور پاسبان عزاء کے سربراہ (لیگل ایڈوایذر) جناب عسکری رضا  کولگنے والی گولیوں میں سے ایک گولی ان کے سر پر لگتی ہویی گردن باہر نکلی ڈاکٹر کے مطابق دہشتگردوں نے عسکری رضا کو تین گولیاں ماری جو اُن کے سر پے لگی ہیں۔ ۔آغا خان اسپتال میں ان کا آپریش دو گھنٹے جاری رہا ڈاکٹرز کی کوششوں کے باوجود وہ زخموں کی تاب نہ لاسکے اور سال 2011 کے آخری شہید ہونے کے درجہ پر فائز ہونے کی سعادت باکمال سے ہمکنار ہوئے ہیں۔ جبکہ ان کے ساتھ گاڑی میں موجود شیعہ نوجوان علی کو پاؤں میں گولی لگی ہے۔ یہ بات یاد رہے کہ چند ماہ قبل ہی شیعہ رہنما عسکری رضا کے دوست اور ملت جعفریہ کے لیگل ایڈوائزر مختار عباس بخاری کو بھی شہید کر دیا گیا تھا جس کے بعد شیعہ رہنما اور پاسبان عزاء کے سربراہ (لیگل ایڈوایذر) جناب عسکری رضا کو مسلسل دھمکیاں موصول ہو رہی تھیں۔ میڈیا کی غیر مصدقہ اطلاع کے مطابق شیعہ رہنما اور پاسبان عزاء کے سربراہ (لیگل ایڈوایذر) جناب عسکری رضا پر فائرنگ کرنے والے دہشت گردوں میں سے ایک  ناصبی دہشت گرد کو دانش کے نام سے شناخت کر کے زخمی حالت میں عباسی شہید اسپتال سے حکام نے گرفتار کر لیا ہے۔