اسرائیل نے عراقی ری ایکٹر پر حملے سے امریکہ کو آگاہ نہیں کیا تھا

Posted: 30/12/2011 in All News, Amazing / Miscellaneous News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Palestine & Israel, Survey / Research / Science News, USA & Europe

لندن(پی اے) عراق کے نیوکلےئر ری ایکٹر پر 1981ء میں فضائی حملے کے اسرائیلی فیصلے سے امریکی حیرت زدہ اور ششدر رہ گئے تھے، یہ انکشاف نیشنل آر کائیوز کی جاری کردہ دستاویزات سے ہوا جو گزشتہ روز منظر عام پر آئیں ،اسرائیل کا قریبی اتحادی ہونے کے باوجود امریکہ کو اسرائیل نے عراق کے ایٹمی ری ایکٹر پر حملے کے بارے میں پیشگی متنبہ نہیں کیا تھا، اسرائیل نے جون 1981 ء میں عراق کے اوسیرک ری ایکٹر پر فضائی حملہ کیا تھا اس حملے کا حکم اس وقت کے اسرائیلی وزیر اعظم بیگن نے جاری کیا تھا۔ دستاویزات کے مطابق جب عراقی ری ایکٹر پر حملے کی اطلاع آئی تو اس وقت واشنگٹن میں برطانوی سفیر سرنکولس ہینڈرسن امریکی ڈیفنس سیکرٹری کیسپر وائن برگر کے ساتھ تھے اور برگر نے کہا کہ ان کے خیال میں بیگن حواس کھو بیٹھے ہیں سرنکولس نے لندن کو کیبل کیا اس وقت عراق میں برطانیہ کے سفیر سرسٹیفن ایگرٹن نے انکشاف کیا کہ اسرائیل کے ایف 15 فائٹرز طیاروں کو فضا میں دیکھ کر عراق میں حیرت زدہ ہوگئے تھے، اطالوی نیشنل ڈے پر استقبالیہ کے اجتماع میں ڈپلومیٹک کور نے اس حملے کے میزائل ری ایکشن پر غور کیا تھا۔

Comments are closed.