پاکستان کوئٹہ : میں نامعلوم افراد نے ڈاکٹر سید باقر شاہ کوگولیاں مار کر شہید کردیا

Posted: 29/12/2011 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir

پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد نے پولیس سرجن ڈاکٹر سید باقر  شاہ کوگولیاں مار کر شہید کر دیا ہے۔پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں نامعلوم مسلح افراد نے پولیس سرجن ڈاکٹر سید باقر شاہ کوگولیاں مار کر شہید کر دیا ہے۔ڈاکٹر باقر شاہ نے سانحہ خروٹ آباد میں ہلاک ہونے والے چیچن کےپانچ شہریوں کا پوسٹمارٹم کیا تھا جس میں انہوں نے کہا تھا کہ سکیورٹی فورسز کی فائرنگ سے یہ ہلاکتیں ہوئی ہیں۔ پولیس سرجن ڈاکٹر باقر شاہ نے ہلاک ہونے والے پانچ چیچن باشندوں کی پوسٹارٹم رپورٹ تیار کی تھی جس میں انہوں نے واضع طور پر کہا تھا کہ پانچ چیچن باشندوں کی ہلاکتیں سکیورٹی فورسز کی فائرنگ سے ہوئیں تھیں۔ اس واقعہ کے فوراً بعد اس وقت کے سینئیر سٹی پولیس آفیسر داؤد جونیجو اور فرنٹیئر کور کے کرنل فیصل نے میڈیا سے بات چیت کرتے ہوئے کہا تھا کہ ہلاک ہونے والے پانچ غیر ملکی افراد خودکش حملہ آور تھے جو کہ تخریب کاری کے لیے کوئٹہ شہر میں داخل ہونے کی کوشش کر رہے تھے لیکن سکیورٹی فورسز نے تخریب کا ایک بڑا منصوبہ ناکام بنا دیا گیا۔ ڈاکٹرسید باقر شاہ کی پوسٹمارٹم رپورٹ نے سکیورٹی فورسز کے اس دعوے کو نہ صرف بے بنیاد قرار دیا تھا بلکہ انہوں نے سانحہ خروٹ آباد سے متعلق بلوچستان ہائی کورٹ کے جج محمد ہاشم خان کاکڑ کی سربراہی میں قائم ہونے والے تحقیقاتی کمیشن کے سامنے بھی اہم گواہ کے طور پر اپنا بیان ریکارڈ کروایا تھا۔ اس دوران پولیس کی وردی میں ملبوس بعض نامعلوم افراد نے پرنس روڑ پر ڈاکٹر باقر شاہ پر قاتلانہ حملہ کیا تھا جس میں وہ زخمی ہوئے تھے۔ واقعہ کے بعد صوبائی حکومت نے نہ صرف سٹی تھانہ کے ایس ایچ او کو برطرف کیا تھا بلکہ بلوچستان ہائی کورٹ نے صوبائی حکومت کو ہدایت کی تھی کہ ڈاکٹر سید باقر شاہ کو سکیورٹی فراہم کی جائے لیکن آج جمعرات کو جب وہ ہسپتال سے گھر کی طرف جا رہے تھے تو اس وقت ان کے ساتھ کوئی سکیورٹی گارڈ نہیں تھا۔ واقعہ کے بعد ڈاکٹروں کی ایک بڑی تعداد بولان میڈیکل کمپلیکس ہسپتال پہنچ گئی جنہوں نے ڈاکٹرسید باقر شاہ کی شہادت  کی ذمہ داری صوبائی حکومت  اور سکیورٹی فورسز پر عائد کر دی ہے

Comments are closed.