جامعہ فاروقیہ دہشتگردوں کی آماجگاہ بن چکا ہے حکومت سختی سے نوٹس لے، علامہ حسن ظفر

Posted: 24/12/2011 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

ایم ڈبلیو ایم پاکستان کے مرکزی رہنماؤں نے ایک بیان میں واضح کیا کہ ملت جعفریہ کسی بھی طور پر عزاداری پر کوئی مفاہمت قبول نہیں کرے گی اور عزاداری پر کسی قسم کی آنچ نہیں آنے دی جائے گی۔مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی رہنماؤں علامہ حسن ظفر، علی اوسط اور محمد مہدی کا کہنا ہے کہ شاہ فیصل کالونی میں موجود جامعہ فاروقیہ جو کہ دہشتگردوں کی آماجگاہ بن چکی ہے، ہمیشہ وہاں سے عزاداری کے جلوسوں اور مجالس کے پروگراموں پر حملے ہوتے رہتے ہیں جبکہ مدرسہ کے مرکزی اسپیکروں سے مذہبی منافرت پھیلانے کے اعلانات بھی ہوتے رہتے ہیں جبکہ ان تمام معاملات کو انتظامیہ کے نوٹس میں لایا جا چکا ہے، تاہم انتظامیہ نے تاحال کسی قسم کی کوئی کارروائی نہیں کی، جس کے نتیجہ میں 25 محرم الحرام کو شہادت امام زین العابدین ع کے موقع پر نکالے گئے جلوس عزاء پر جامعہ فاروقیہ کے دہشتگردوں نے فائرنگ کی اور خواتین سمیت بچوں کو حملہ کا نشانہ بنایا جو کہ انتہائی شرمناک اور گھناؤنا فعل ہے۔  رہنماؤں کا کہنا تھا کہ جامعہ فاروقیہ کے دہشتگردوں نے جس راستے پر عزاداروں پر حملہ کیا اسے پہلے سے ہی بند کر دیا گیا تھا، تاہم دہشتگردوں نے زبردستی اس راستے سے آ کر جلوس عزاء میں شریک ہونے والے عزاداروں بشمول بچوں، جوانوں اور خواتین کو دہشتگردی کا نشانہ بنایا، ان کا کہنا تھا کہ حکومت سے مطالبہ کرتے ہیں کہ 25 محرم کو شاہ فیصل کالونی میں جلوس عزاء پر حملہ کرنے والے جامعہ فاروقیہ کے دہشتگردوں کو فی الفور گرفتار کیا جائے اور قرار واقعی سزا دی جائے۔ ان کا کہنا تھا کہ شاہ فیصل کالونی میں عزاداروں پر حملہ کرنے والے دہشتگردوں کی سرپرستی علاقہ ایس ایچ او ندیم بیگ کر رہا ہے، جسکے خلاف سخت کاروائی کی جائے۔
رہنماؤں نے حکومت سے مطالبہ کیا کہ ایسے مدارس کے خلاف سختی سے نوٹس لیا جائے، جہاں دہشتگردوں کو پروان چڑھایا جاتا ہے اور ان مدارس میں جامعہ فاروقیہ صف اول میں ہے، انہوں نے وفاق المدارس کے مولانا اسفند یار خان اور مولانا حنیف جالندھری سے اپیل کی کہ وہ سامنے آئیں اور اپنی صفوں سے دہشتگرد عناصر کو نکال باہر کریں اور وفاق المدارس سے ایسے مدارس کی رکنیت ختم کی جائے جہاں دہشتگردی کی تربیت دی جاتی ہو۔ رہنماؤں نے واضح کیا کہ ملت جعفریہ کسی بھی طور پر عزاداری پر کوئی مفاہمت قبول نہیں کرے گی اور عزاداری پر کسی قسم کی آنچ نہیں آنے دی جائے گی۔ انہوں نے مزید کہا کہ ملک اور شہر کراچی کو عدم استحکام کا شکار کرنے کی سازش کی جا رہی ہے، جس میں کالعدم دہشتگرد گروہ جو امریکی و اسرائیلی ایماء پر پاکستان میں دہشتگردی کر رہے ہیں، عزادرای کے جلوسوں پر حملے کر کے انارکی پھیلانا چاہتے ہیں۔

Comments are closed.