دفاع پاکستان کانفرنس، کالعدم سپاہ صحابہ کے پرچم لہرانے پر رپورٹ طلب کر لی، رانا ثناءاللہ

Posted: 22/12/2011 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر قانون کا کہنا تھا کہ کالعدم تنظیم کا پرچم لہرانا یا دفتر کھولنا قانوناً جرم ہے۔ اس پر سخت کارروائی ہو گی۔پنجاب اسمبلی کے اجلاس کے موقع پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے صوبائی وزیر قانون رانا ثناءاللہ خان نے کہا کہ اٹھارہ دسمبر کو مینار پاکستان لاہور میں ہونے والی دفاع پاکستان کانفرنس میں کالعدم دہشتگرد تنظیم سپاہ صحابہ کے پرچم لہرانے کا نوٹس لے لیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ خفیہ اداروں کو اس حوالے سے رپورٹ پیش کرنے کے احکامات جاری کر دیئے گئے ہیں۔ رپورٹ آنے پر ذمہ داروں کے خلاف مقدمہ درج کیا جائے گا۔ ان کا کہنا تھا کہ کالعدم تنظیم کا پرچم لہرانا یا دفتر کھولنا قانوناً جرم ہے۔ اس پر سخت کارروائی ہو گی۔ رانا ثناءاللہ خان نے کہا کہ کالعدم سپاہ صحابہ غیرقانونی ہے۔ اسے سرگرمیاں جاری رکھنے کی اجازت نہیں دی جا سکتی۔  ایک سوال کے جواب میں پنجاب کے وزیر قانون نے کہا کہ سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر مرحوم کے صاحبزادے اور امریکی کنٹریکٹر وائن سٹائن پاک افغان سرحد کے قریب شمالی وزیر ستان میں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دونوں مغویوں کو طالبان گروہ نے اغوا کیا ہے۔ ان کی بازیابی کے لئے مذاکرات جاری ہیں۔ انہوں نے کہا کہ دہشت گردی کے واقعات اور بیروزگاری کے باعث اغوا برائے تاوان کی وارداتوں میں اضافہ ہوا ہے۔  وزیر قانون نے کہا کہ قصور میں تحریک انصاف کے جلسے سے کرسیاں اٹھانے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی اور عمران خان کو بھی شامل تفتیش کیا جائے گا۔ کیونکہ وہی جانتے ہیں کہ کہاں سے لوگ آئے تھے۔ انہوں نے کہا کہ کرائے پر مزدوروں سے جلسہ بھرا گیا۔ جنہیں وعدے کے مطابق دوپہر کا کھانا دیا گیا اور نہ ہی یومیہ اجرت، جس پر وہ جاتے ہوئے کرسیاں اٹھا کر لے گئے۔ ان کا کہنا تھا کہ پولیس کو انتظار ہے کہ تحریک انصاف کی مقامی قیادت درخواست دے تاکہ مقدمہ درج کیا جا سکے۔

Comments are closed.