نیٹو حملے پر امریکی صدر کی معافی کافی نہیں، معافی غلطی پر ہوتی ہے بدمعاشی پر نہیں، صاحبزادہ فضل کریم

Posted: 16/12/2011 in All News, Breaking News, Local News, Pakistan & Kashmir, USA & Europe

مرکزی عہدیداران کے اجلاس سے خطاب میں سنی اتحاد کونسل کے چیئرمین کا کہنا ہے کہ نیٹو حملہ اقوام متحدہ کے نیٹو کو دیئے گئے مینڈیٹ کی کھلی خلاف ورزی ہے، عالمی معاہدوں کو پارلیمنٹ کی منظوری سے مشروط کیا جائے۔سنی اتحاد کونسل کے مرکزی دفتر گلبرگ میں مرکزی عہدیداران کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے سنی اتحاد کونسل پاکستان کے چیئرمین اور رکن قومی اسمبلی صاحبزادہ حاجی محمد فضل کریم نے کہا ہے کہ نیٹو حملوں پر امریکی صدر کی معافی کافی نہیں کیونکہ معافی غلطی کی ہوتی ہے بدمعاشی کی نہیں، قوم نیٹو سپلائی کی بحالی برداشت نہیں کرے گی، نیٹو حملہ اقوام متحدہ کے نیٹو کو دیئے گئے مینڈیٹ کی کھلی خلاف ورزی ہے، عالمی معاہدوں کو پارلیمنٹ کی منظوری سے مشروط کیا جائے، سفیروں کی کانفرنس میں ملکی خودمختاری پر سمجھوتہ نہ کرنے کا اعلان خوش آئند ہے۔ اجلاس میں حاجی محمد حنیف طیب، پیر محمد افضل قادری، الحاج امجد علی چشتی، پیر سید محفوظ مشہدی، پیر محمد اطہر القادری، محمد نواز کھرل، پیر سید محمد اقبال شاہ اور دیگر نے شرکت کی۔  صاحبزادہ فضل کریم نے مزید کہا کہ میمو سکینڈل کے خالق قادیانی ہیں جو پاکستان کو عدم استحکام کا شکار کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ نسل در نسل حکمرانی کرنے والوں نے اپنی اولادیں بھی سیاسی میدان میں اتار دی ہیں, جس سے موروثی سیاست مزید مضبوط ہو گی، اس لیے قوم بار بار آزمائے ہوئے سیاستدانوں کو قصۂ پارینہ بنا دے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مادرِ وطن سے وفا کے لیے اپنی جانیں بھی قربان کر دیں گے۔   سنی اتحاد کے چیئرمین نے مزید کہا کہ دھرتی کا قرض چکانے کا وقت آ گیا ہے، اس لیے پوری قوم دفاع وطن کے لیے متحد ہو جائے۔ اجلاس میں 23 دسمبر کے ’’یوم مذمت امریکہ‘‘ اور 8 جنوری کے گوجرانوالہ کے جلسۂ عام کی تیاریوں کے لیے مختلف کمیٹیاں بھی تشکیل دی گئیں۔ اجلاس میں ایک قرارداد کے ذریعے صاحبزادہ حامد سعید کاظمی کی رہائی کا مطالبہ بھی کیا گیا۔

Comments are closed.