امریکہ، بلیک واٹر نے اپنا نام زی سے تبدیل کر کے اکیڈمی رکھ لیا

Posted: 15/12/2011 in All News, Important News, Survey / Research / Science News, USA & Europe

اس کمپنی کا مقصد امریکی سفارت کاروں اور دیگر افراد کا تحفظ ہے مگر یہ تنظیم ایسے کاموں میں استعمال ہوتی رہی ہے جو امریکا قانونی وجوہات سے خود نہیں کرنا چاہتا۔امریکا کی بدنام زمانہ سابق نجی سکیورٹی ایجنسی بلیک واٹر نے اپنا نام زی سے تبدیل کر کے اکیڈمی رکھ لیا۔ بلیک واٹر عراق میں شہریوں کے قتل میں ملوث رہی ہے۔ ایکس ای یا زی سروسز ایل ایل سی (Xe Services LLC ) جس کا پرانا نام بلیک واٹر ورلڈ وائیڈ یا بلیک واٹر یو ایس اے تھا، اب نئے نام سے اپنی کارروائیاں کرے گی۔ کمپنی کے صدر اور چیف ایگزیکٹیو ٹیڈ رائٹ نے ایک انٹرویو میں اعلان کیا ہے کہ زی اب اکیڈمی کے نام سے اپنا کام جاری رکھے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ اکیڈمی مستقبل میں امریکا کے قومی مزاج کا تعین کرنے کیلئے دانشوروں اور جنگجووٴں کو تربیت دے گی۔  ایک سوال پر ٹیڈ نے بتایا کہ کمپنی کا نیا نام بالکل سادہ سا ہے اور اس فرم کو نئی اونرشپ، نئی لیڈرشپ دی ہے، اس کے علاوہ سکیورٹی سروسز اور تربیت پر ازسرنو اسٹریٹجی بنائی جائے گی۔ کمپنی نے اپنی نئی ویب سائٹ بھی بنالی ہے جبکہ آرلنگٹن میں نیا کارپوریٹ ہیڈ کوارٹر قائم کیا گیا ہے۔ بلیک واٹر کے ارکان عراق جنگ میں فلوجہ، نجف اور بغداد میں غیر قانونی طور پر عام شہریوں کے قتل میں ملوث رہے ہیں اور اس کے کچھ اہلکاروں پر سترہ عراقی شہریوں کے قتل کا مقدمہ بھی امریکا میں چلایا گیا۔ اس کمپنی کا مقصد امریکی سفارت کاروں اور دیگر افراد کا تحفظ ہے مگر یہ تنظیم ایسے کاموں میں استعمال ہوتی رہی ہے جو امریکا قانونی وجوہات سے خود نہیں کرنا چاہتا

Comments are closed.