اسرائیل سے نمٹنے کے لیے مسلح اور سیاسی جدوجہد کا امتزاج بہترین آپشن: سروے

Posted: 15/12/2011 in All News, Breaking News, Palestine & Israel, Survey / Research / Science News, USA & Europe

تل ابیب : فلسطین میں قابض اسرائیل کے خلاف مزاحمت برقرار رکھنے کے لیے سیاسی اور قومی جدوجہد کے ساتھ مسلح مزاحمت جاری رکھنا ہی سب سے بہترین آپشن ہے۔ ان خیالات کا اظہار مرکز اطلاعات فلسطین کے ہفتہ وار سروے میں شریک 91فیصد رائے دہندگان نے کیا۔فلسطینی امور پر مستند خبریں فراہم کرنے والی ویب سائٹ پر چار تا گیارہ دسمبر تک جاری رہنے والے سروے کے اعداد و شمار کے مطابق 1948 میں فلسطین پر قبضہ کر کے بنائی گئی صہیونی ریاست اسرائیل کا مقابلہ کرنے کے لیے مستقبل میں بھی فلسطینی قوم کو قومی اور مسلح جدوجہد کو ساتھ ساتھ رکھنا ہوگا۔سروے میں کل 5741افراد نے حصہ لیا جن میں سے 5245افراد نے مسلح اور قومی مزاحمت کے اشتراک کو ترجیح دی جبکہ صرف 151افراد، تقریبا تین فیصد، کا کہنا تھا کہ اسرائیل کے خلاف صرف قومی اور سیاسی مزاحمت ہی درست آپشن ہوگا۔ 345 افراد، چھ فیصد، کی رائے یہ تھی کہ اسرائیل کے ساتھ معاملات کے حل کے لیے صرف اور صرف اسلحہ اٹھانے کی آپشن ہی کارگر ثابت ہو گی ۔خیال رہے کہ اسلامی تحریک مزاحمت ۔ حماس کے سیاسی شعبے کے سربراہ خالد مشعل اور تحریک فتح کے سربراہ محمود عباس کے مابین ملاقات میں حماس نے اسرائیل کے خلاف دیگر ذرائع کے ساتھ مسلح مزاحمت جاری رکھنے کے عزم کا بھی اعادہ کیا تھا۔

Comments are closed.