آل سعود کی حکومت ختم ہونی چاہئے

Posted: 15/12/2011 in All News, Breaking News, Religious / Celebrating News, Survey / Research / Science News

نامور خطیب اور العوامیہ کے امام جمعہ شیخ نَمِر باقر النَمِر نے آل سعود کی حکمرانی کے فوری خاتمے پر زور دیا ہے۔ انھوں نے العوامیہ کی مسجد امام حسین علیہ السلام میں نمازیوں سے خطاب کرتے ہوئے منطقۃ الشرقیہ میں تناؤ کی ذمہ داری آل سعود کی حکومت پر عائد کی اور کہا: سعودی سرکاری اہلکار اور ان کے سیکورٹی افسران الشرقیہ میں بدامنی پھیلارہے ہیں لیکن انہیں جان لینا چاہئے کہ عوام ان کے مقابلے میں مزاحمت کریں گے اور آل سعود کی دھمکیاں عوامی کو ان کے مطالبات سے باز نہیں رکھ سکیں گی۔ انھوں نے آل سعود کی بادشاہت کو قرآن مجید کے منافی قرار دیا اور کہا: آل سعود کی حکومت جو جمہوریت اور اسلامی اقدار سے مغایرت رکھتی ہے، خلیج فارس کے علاقے سے اکھڑ جانی چاہئےکیونکہ سعودی عوام بادشاہت کے خلاف ہیں کیونکہ اس حکومت کے پاس عوام کے قتل عام کے سوا اور کئی بھی منصوبہ نہیں ہے لیکن اس کو معلوم ہونا چاہئے کہ شہادت مستقبل کی عزت و کرامت کو جنم دیتی ہے۔ انھوں نے کہا: آل سعود کو سعودی عوام کا قتل عام بند کردینا چاہئے۔ انھوں نے کہا: سعودی عوام سیاسی اور فکری آزادی اور سیاسی قیدیوں کی فوری رہائی کے مطالبے سے پسپا نہیں ہونگے اور حکومت کی بھی ذمہ داری بنتی ہے کہ وہ عوامی مطالبات پر فوری  عملدرآمد کرے اور عوام کے قتل عام سے اجتناب کرے۔ شیخ باقر النمر نے بحرینی عوام پر آل خلیفہ کے مظالم کی بھی مذمت کی اور کہا: آل خلیفہ حکمران اجنبی قوتوں کے فرامین پر عمل کررہے ہیں اور اسی حال میں عوام پر بیرونی قوتوں سے وابستگی کا الزام لگا رہے ہیں اور یہی صورت حال سعودی عرب میں دکھائی دے رہی ہے کیونکہ سعودی عرب میں ہونے والے احتجاجی مظاہرے ہر لحاظ سے قومی اور اندرونی ہیں لیکن حکومت ان مظاہروں کو بیرونی قوتوں سے وابستہ قرار دے رہی ہے۔ انھوں نے کہا: خلیفی حکمران بحرینی عوام کو کچلنے کے لئے امریکی اور برطانوی فوجیوں سے مدد لے رہے ہیں اور سعودی عرب میں ہم سے کہا جاتا ہے کہ خاموش رہیں تا ہم، ہم مزاحمت جاری رکھیں گے اور پر امن مظاہروں کے ذریعے اپنے مطالبات پر اصرار کریں گے۔ انھوں نے آل سعود کی نام نہاد “انسداد بغاوت” فورسز کو سعودی عرب میں بغاوت کی فضا قائم کرنے کا الزام لگایا اور کہا: آل سعود کی فورسز عوام کے قتل عام اور تناؤ پیدا کرنے والے اقدامات کا سہارا لے کر ملک میں انارکی پھیلارہی ہیں۔ انھوں نے بحرین سے سعودی گماشتوں کے انخلاء کی ضرورت پر زور دیتے ہوئے کہا کہ ہم اور ہمارے نوجوان بحرینی عوام ، سعودی عرب میں شیعہ اسیروں کی حمایت اور آزادی اور کرامت و وقار کے حصول کی کی راہ کی راہ میں شہادت کے لئے تیار ہیں۔

Comments are closed.