اپنا تیل ان ملکوں کو فروخت کرے گا جو امریکہ کے زیر اثر نہیں

Posted: 12/12/2011 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Russia & Central Asia, USA & Europe

اسلامی جمہوریہ ایران کی پارلیمنٹ میں قومی سلامتی اور خارجہ پالیسی کمیشن کے نائب سربراہ حسین ابراہیمی نے کہا ہے ایران تیل کے عظیم ذخائر کا حامل ہے اور اسے تیل فروخت کرنے کے لئے منڈیوں کی کمی نہیں ہے۔  حسین ابراہیمی نے پارلیمنٹ نیوز سے گفتگو میں مغربی ملکوں کی جانب سے ایران کے تیل کے بائيکاٹ کے منصوبے کو غیر دانشمندانہ قرار دیا اور کہا اگر ایران کے تیل کا بائیکاٹ کیا گيا تو مغرب کی صنعتیں مشکلات کی زد میں آجائيں گي۔ انہوں نے کہا کہ یورپی ملکوں کے ساتھ ایرانی تیل کے معاملات بہت تھوڑے ہیں اور ایران نے ایک مدت سے یہ اسٹریٹجی بنا رکھی ہے کہ اپنا تیل ان ملکوں کو فروخت کرے گا جو امریکہ کے زیر اثر نہیں ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تجربہ سے واضح ہے کہ جہاں تیل ہے وہاں اس کے خریدار بھی ہیں۔  یاد رہے یورپی یونین نے ایران کی ایک سو اسی 180 شخصیات اور کمپنیوں کی فہرست جاری کی ہے جن پر اس نے حال ہی میں نئي پابندیاں لگائي ہیں۔ امریکہ اور اس کے اتحادیوں نے ایران کے ایٹمی پروگرام کے حوالے سے ایران پر نئے سرے سے پابندیاں لگائي ہیں۔

Comments are closed.