نمائش چورنگی واقعہ کے مجرم رہا ہوئے تو اس میں عدلیہ کی نااہلی ہو گی، مولانا شہنشاہ نقوی

Posted: 10/12/2011 in Advertise Religious, All News, Breaking News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

شیعہ علماء کونسل کے رہنما کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت پر واضح کیا گیا ہے کہ شیعہ قوم نہیں چاہتی کہ پاکستان میں زور زبردستی اور ڈنڈے کی سیاست قائم ہو۔  پاکستان میں کام کرنے والے ادارے نہیں چاہتے کہ دہشتگردی ختم ہو، یہ نادیدہ حکمران پاکستان میں دہشتگردی کی پشت پناہی کر رہے ہیں۔ اگر نمائش چورنگی واقعہ کے مجرم رہا ہوئے تو اس میں عدلیہ کی نااہلی ہو گی۔ ان خیالات کا اظہار شیعہ علماء کونسل کے مرکزی رہنما مولانا سید شہنشاہ حسین نقوی نے ٹیکسلا میں کربلا شاہ فتح حیدر صفدر میں تدفین کی مجلس عزاء سے خطاب کے بعد  بات چیت کرتے ہوئے کیا۔   ان کا کہنا تھا کہ سانحہ نمائش چورنگی کے بعد شیعہ علماء نے حالات کو قابو کرنے میں اہم کردار ادا کیا۔ ان کا کہنا تھا کہ سندھ حکومت پر یہ بات واضح کی گئی ہے کہ شیعہ قوم نہیں چاہتی کہ پاکستان میں زور زبردستی اور ڈنڈے کی سیاست قائم ہو۔ لیکن اگر یہی طے ہے کہ جسکی لاٹھی اسکی بھینس، تو ہم بھی حکومت کو آڑے ہاتھوں لے سکتے ہیں۔ ان کا کہنا تھا کہ سانحہ نمائش چورنگی کے مزید مجرم اگر رہا کئے گئے تو ہم انتہائی اقدام سے گریز نہیں کریں گے۔ رہنما شیعہ علماء کونسل کا کہنا تھا کہ منظور وسان نے ان سے ملاقات کے دوران وعدہ کیا ہے کہ ہم 12 نامزد مجرموں کو کیفر کردار تک پہنچائیں گے۔ وزیر داخلہ سندھ کا مزید کہنا تھا کہ باوردی اسکائوٹس شہداء کے ورثا کو دس دس لاکھ معاوضہ ادا کیا جائے گا۔   شہنشاہ نقوی کا کہنا تھا کہ اگر نمائش چورنگی واقعہ کے مجرم رہا ہو جاتے ہیں تو اس میں عدلیہ کی نااہلی ہو گی، چونکہ مجرموں کے خلاف گواہیاں تک ہو چکی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس کیس کے سلسلے میں تین ایف آئی آر درج کروائی گئیں تھیں، جن میں ایک اہل تشیع، دوسری سنی حضرات کی طرف سے اور تیسری حکومت کی طرف سے درج کروائی گئی تھی۔

Comments are closed.