حکومت بلوچستان نے عظمت شہداء کانفرنس میں پیش کردہ تمام مطالبات تسلیم کر لیے

Posted: 30/11/2011 in All News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News

وزیر اعلیٰ بلوچستان نے مجلس وحدت مسلمین کے زیر اہتمام کوئٹہ کی سرزمین پر منعقد ہونے والی عظمت شہداء کانفرنس میں پیش کردہ تمام مطالبات تسلیم کر لیے۔وزیر اعلیٰ بلوچستان کی جانب سے چیف سیکرٹری بلوچستان ،آئی جی بلوچستان، کمشنر کوئٹہ اور ڈی ّئی جی کوئٹہ پر مشتمل ایک اعلی سطحی وفد نے کانفرنس کے بانی اشرف زیدی اور دیگر شیعہ اکابرین سے مذاکرات کیے اور تمام مطالبات پورے کرنے کی یقین دہانی کرائی تاہم شیعہ کانفرنس کےسربراہ اشرف زیدی نے مطالبہ کیا کہ وزیر اعلیٰ بلوچستان مطالبات تسلیم کرنے کا اعلان پریس کانفرنس کے ذریعے میڈیا میں کریں ، دریں اثنا مجلس وحدت مسلمین پاکستان کے مرکزی ڈپٹی سیکرٹری علامہ امین شہیدی نے بتایا کہ عظمت شہداء کانفرنس کوئٹہ مین پیش کردہ مطالبات کے حوالے سے وفاقی سطح پر بھی بات چیت ہوئی ہے اور وفاقی وزیر داخلہ نے ان مطالبات کو جائز قراد دیا ہے ، یاد رہے کہ کانفرنس میں مطالبہ کیا گیا تھا کہ مذہبی دہشتگردی، ٹارگٹ کلنگ، اغوا برائے تاوان کی روک تھام کی جائے، کوئٹہ شہر میں امن و امان قائم کرنے اور عوام اور تاجروں کے تحفظ کیلئے پولیس کو مکمل اختیارات دیے جائیں، دہشتگردی کی کارروائیوں میں ملوث مجرموں کو گرفتار کرکے قانون کے مطابق سزا دی جائے، جن، جن علاقوں میں دہشتگردی کی کارروائیاں ہوچکی ہیں وہاں پر فوج کی طرف سے بلاامتیاز ٹارگٹڈ آپریشن کیا جائے، نام بدل بدل کر کام کرنے والی مذہبی تنظیموں کیخلاف سخت ترین کارروائی عمل میں لائی جائے، دہشتگردانہ کارروائیاں قبول کرنے والی مذہبی تنظیموں کی قیادت اور عہدیداروں کے خلاف کڑی اور سخت کارروائی کو عمل میں لایا جائے، یوم القدس 3 ستمبر دوہزار دس کے المناک واقعہ میں شرکائے ریلی، علمائے کرام اور زخمی نوجوانوں کے خلاف درج کیے گئے بے بنیاد مقدمات کو فی الفور ختم کیا جائے اور واقعہ کے پس پردہ عوامل کو بے نقاب کرکے منطرعام پر لایا جائے اور ان کیخلاف قانونی کارروائی کی جائے۔اور اعلان کیا گیا تھا کہمطالبات پورے نہ ہونے کی صورت میں بیس نومبر کے بعد مجلس وحدت مسلمین محرم الحرام کے دوران حکومت کے ساتھ تعاون کے حوالے بسے اپنے لائحہ عمل کا اعلان کرے گی

Comments are closed.