امریکی منشیات کی پیداوار میں اضافے کے ذمہ دار : ایران

Posted: 30/11/2011 in Afghanistan & India, All News, Breaking News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Survey / Research / Science News, USA & Europe

اسلامی جمہوریہ ایران کے وزیر داخلہ مصطفی محمد نجار نے افغانستان میں غاصب امریکیوں کی موجودگي کو افغانستان میں تشدد اور منشیات کی پیداوار میں اضافے کا سبب قرار دیا ہے۔ ارناکی رپورٹ کے مطابق مصطفی محمد نجار نے گزشتہ شب کابل میں افغانستان کے وزیر خارجہ زلمی رسول کے ساتھ ہونے والی ملاقات میں کہا کہ افغانستان میں امریکی موجودگي سے نہ صرف بدامنی میں کوئي کمی نہیں ہوئي ہے بلکہ یہ منشیات کی پیداوار میں اضافے کا سبب بنی ہے۔ انہوں نے اسلامی جمہوریہ ایران کی طرف سے افغانستان میں بیرونی افواج کی موجودگي کی مخالفت کی طرف اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ بیرونی افواج کی موجودگي علاقے میں بدامنی کا سبب ہے۔ اس ملاقات میں افغانستان کے وزیر خارجہ زلمی رسول نے افغان مہاجرین کو پناہ دینے کے لئے ایران کی قدردانی کی اور کہا کہ اسلامی جمہوریہ ایران نے گزشتہ تین عشروں کے دوران لاکھوں افغان مہاجرین کو پناہ دی اور ان کی پذیرائي بھی۔اس سے قبل ایرانی وزیر داخلہ مصطفی محمد نجار نے کابل میں انسداد منشیات کے بارے میں ہونے والے ایران ، افغانستان اور پاکستان کے سہ فریقی اجلاس میں کہا کہ منشیات کی اسمگلنگ کو روکنے کے لئے سرحدوں کی نگرانی ، سیکورٹی فورسز کی تربیت اور پولیس تعاون میں اضافہ ہونا چاہئے۔اس اجلاس میں ، جو اقوام متحدہ کے زیر نگرانی اتوار کو کابل میں شروع ہوا ، منشیات کی اسمگلنگ کی روک تھام اور مشترکہ سرحدوں پر نگرانی اور سلامتی کے اقدامات کو بہتر بنانے کے سلسلے میں ایران ، پاکستان اور افغانستان کے مشترکہ تعاون کے بارے میں تبادلۂ خیال کیا گيا۔واضح ر ہے کہ افغانستان میں بیرونی افواج کی آمد کے بعد سے منشیات کی پیداوار میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے جس پر ایران سمیت افغانستان کے ہمسایہ ممالک نے تشویش کا اظہار کیا ہے۔

Comments are closed.