نیٹو حملہ کے بعد پاکستان نے امریکہ کو دی گئی مراعات پر نظرثانی شروع کر دی

Posted: 29/11/2011 in All News, Breaking News, Important News, Local News, Pakistan & Kashmir, USA & Europe

حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکہ سے تعلقات مساوات کی بنیاد پر ہونگے، ہم امریکہ کے محتاج نہیں علاقائی صورتحال کی وجہ سے امریکہ ہمارا محتاج ضرور ہے، امریکہ سے تصادم نہیں چاہتے لیکن اپنی سر زمین پر جارحانہ اقدام کو برادشت نہیں کیا جائیگا، پاکستان کی حاکمیت اعلی ہمارا سب سے بڑا مسئلہ ہے۔حکومت پاکستان نے نیٹو حملہ پر معذرت کو امریکی قیادت کی معذرت سے مشروط اور امریکہ کو دی گئی مراعات پر نظرثانی شروع کر دی ہے۔ حکومتی ذرائع کے مطابق امریکہ سے تعلقات خودمختاری اور مساوات کی بنیاد پر ہونے چاہئے۔ حکومتی ذرائع کا کہنا تھا کہ ہم امریکہ کے محتاج نہیں لیکن علاقائی صورتحال کی وجہ سے امریکہ ہمارا محتاج ضرور ہے، جب کہ افغانستان پر فوج کشی کا اتنا نقصان امریکہ کا نہیں،جتنا پاکستان کا ہوا ہے۔ حکومتی ذرائع کا کہنا ہے کہ امریکہ سے تصادم نہیں چاہتے لیکن اپنی سر زمین پر کوئی جارحانہ اقدام کو برادشت نہیں کیا جائے گا۔ ذرائع کا کہنا تھا کہ پاکستان کی حاکمیت اعلی ہمارا سب سے بڑا مسئلہ ہے اور نیٹو واقعہ حاکمیت اعلی کی خلاف ورزی تھا جس کو کسی طور بھی برداشت نہیں کر سکتے۔ یاد رہے کہ نیٹو فورسزکی حملوں میں 24 فوجی افسر اور اہلکار شہید اور متعدد زخمی ہو چکے ہیں اور حکومت پر عوامی وسیاسی حلقوں کا شدید دباؤ تھا کہ امریکہ سے تعلقات پر نظرثانی کی جائے جس کے بعد حکومت نے فیصلہ کن اقدام کرنے کا عزم کیا ہے۔

Comments are closed.