پاک ایران گیس کے بارے میں امریکی سفیر کا بیان قابل مذمت اور خودمختاری پر وار ہے، مذہبی رہنما

Posted: 28/11/2011 in All News, Breaking News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Local News, Pakistan & Kashmir, Religious / Celebrating News, USA & Europe

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مذہبی رہنماوں کا کہنا تھا کہ اگر امریکہ کو ہی سارے فیصلے کرنے ہیں تو ہمارے حکمران کس مرض کی دوا ہیں، جو امریکہ کی طرف سے ہرزہ سرائی پر زبان بند رکھنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔امریکی سفیر کے اس بیان پر کہ ایران سے گیس لینے کا فیصلہ پاکستان کے مفاد میں نہیں ہے، کے حوالے سے ملک کی مذہبی جماعتوں کے مرکزی قائدین نے اس امریکی ڈکٹیشن پر سخت ردعمل کا اظہار کرتے ہوئے اسے ملکی خودمختاری پر کھلا وار قرار دیا ہے۔شیعہ علما کونس کے مولانا ساجد نقوی صاحب، جعفریہ الائنس پاکستان کے صدر علامہ عباس کمیلی، مجلس وحدت مسلمین کے مولاناراجہ ناصر،  جماعت اسلامی کے امیر منور حسن، جماعتہ الدعوة کے حافظ عبدالرحمن مکی، تنظیم اسلامی پاکستان کے امیر عاکف سعید اور جمعیت علمائے پاکستان کے قاری زوار بہادر نے نوائے وقت اور دیگر میڈیا کے نمائندوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ امریکہ کو سارے فیصلے کرنے ہیں تو ہمارے حکمران کس مرض کی دوا ہیں، جو امریکہ کی طرف سے ہرزہ سرائی پر زبان بند رکھنے کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔ ہماری قسمت اور پالیسیوں کے فیصلے انہوں نے ہی کرنے ہیں تو حکمران براہ راست سارے اختیارات بھی عملی طور پر انہیں دیدیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ بیان قابل مذمت ہے۔ امریکہ کو اب مزید شہ مل گئی ہے۔ وہ ہمارے مفاد اور باقی دنیا کے ساتھ ہمارے معاملات پر بھی اب ہمیں ڈکٹیٹ کرنے لگا ہے اور ہمارے حکمران معلوم نہیں کس خوف سے خاموش ہیں۔

Comments are closed.