یہودی لابی امریکہ اور ایران کے درمیان جنگ چاہتی ہے، ایسا ہوا تو امریکہ کو بھاری قیمت چکانا ہو گی، خورشید قصوری

Posted: 23/11/2011 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Pakistan & Kashmir, USA & Europe

ایران امریکہ محاذ آرائی کم کرنے کی کوشش کی، امریکہ ایران کے پرامن ایٹمی پروگرام پر کوئی بات سننے کو تیار نہیں،امریکہ اور ایران کے درمیان جنگ کی صورت میں سب سے زیادہ نقصان پاکستان کا ہو گا۔ امریکی صدر کی گرتی مقبولیت میں اضافے کے لئے یہودی لابی ایران سے جنگ چاہتی ہے، پاکستان ایران اور امریکہ تعلقات کو معمول پر لانے کی پوزیشن میں نہیں امریکہ میں اس وقت 9.2 فیصد شرح سے بیروزگاری ہے، جس کی وجہ سے امریکی صدر باراک اوباما پر اصلاحات کے لئے دباو بڑھ رہا ہے کہ عوام کو روزگار فراہم کیا جائے۔ اس وجہ سے امریکی صدر کی مقبولیت پچاس فیصد کم ہو گئی ہے۔ باراک اوباما کی مقبولیت میں اضافے کے لئے یہودی لابی چاہتی ہے کہ ایران سے چھیڑ چھاڑ کر دی جائے۔ تو وہ آئندہ انتخابات جیت سکیں گے اور آپ کو معلوم ہو گا کہ اسرائیلی لابی کا امریکی میڈیا، بینکنگ اور امریکی کانگریس پر کنٹرول ہے۔ جو اپنے مفا ات کے حق میں پالیسیاں بنوانے کے لئے اثر و رسوخ اور دباو استعمال کرتی ہے۔ امریکی کانگریس کے اراکین کو یہودی لابی باقاعدہ threat کرتی ہے کہ ان کے مفادات کے تحفظ کی پالیسیوں کی حمایت نہ کرنے کی صورت میں انہیں آئندہ انتخابات میں شکست کا سامنا کرنا پڑے گا۔پاکستان کی اب بین الاقوامی سطح پر پہلے والی پوزیشن نہیں رہی کہ ایران اور امریکہ کے درمیان حالات کو معمول پر لا سکے، ہم دہشتگردی کی وجہ سے اپنے اندرونی مسائل میں گھرے ہوئے ہیں، ہمارے دور میں پاکستان پہلی نو اہم ریاستوں میں شامل تھا۔ اب تو معیشت کا بیڑہ غرق کر دیا گیا ہے، پاکستان کیا رول ادار کر سکتا ہے۔؟امریکہ اور ایران کے درمیان جنگ کی صورت میں سب سے زیادہ نقصان پاکستان کو ہو گا۔ ہمارے بارڈر پر افغانستان میں 32 سال سے سوویت یونین کی 1979ء میں آمد کی وجہ سے جنگ جاری ہے، بھارت سے ہمارے تعلقات اچھے نہیں ہیں، اب تیسرے بارڈر پر بھی جنگ شروع ہو گئی تو حالات بہت خراب ہوں گے۔ جب بھی امریکہ اور ایران کے درمیان جنگ کا سنتا ہوں تو گھبراتا ہوں، ہم پہلے سے ہی دہشتگردی اور بدامنی کا شکار ہے۔

 

Comments are closed.