امریکی دفاعی اخراجات میں کمی پینٹاگون کیلئے قیامت ہو گی، لیون پنیٹا

Posted: 23/11/2011 in All News, Amazing / Miscellaneous News, Russia & Central Asia, USA & Europe

دفاعی اخراجات میں کمی پر عمل شروع ہو جاتا ہے تو دفاعی تجزیہ کاروں کے نزدیک ہائی پروفائل ہتھیاروں کے پروگراموں کی ایک بڑی تعداد کو ختم کرنا پڑ سکتا ہے۔امریکا آئندہ دہائی میں اپنے دفاعی اخراجات میں ایک ٹریلین ڈالر کی کمی کے منصوبے پر عمل شروع کرنے والا ہے۔ لیون پنیٹا فوجی اخراجات میں کٹوتی کے مجوزہ منصوبے کو پینٹا گون کیلئے قیامت قرار دے چکے ہیں۔ واشنگٹن میں دفاعی کٹوتیوں پر طویل ترین میدان سجنے جا رہا ہے، ہنگامی حالات میں جنگی اخراجات پر اثرات نہیں پڑیں گے۔ پینٹاگون ایف 35، نیول پٹرول ایئر کرافٹ اور جنگی جہازوں کی خریداری کے منصوبوں کو ترک کر سکتا ہے۔ امریکی اخبار “وال اسٹریٹ جرنل” کی رپورٹ کے مطابق سپر کمیٹی کے معاہدے تک پہنچنے میں ناکامی اس امکان کو ظاہر کرتی ہے جس کا اشارہ وزیر دفاع لیون پنیٹا نے پینٹاگون کیلئے قیامت کا منظر قرار دیا تھا۔ دفاعی حکام اور بجٹ کے ماہرین کا کہنا ہے کہ مخصوص دفاعی اشیاء کی کٹوتی پر طویل لڑائی کیلئے واشنگٹن میں اسٹیج سج چکا ہے۔ پینٹا گون کچھ ایسی تخلیقی اکاوٴنٹنگ کی مدد سے دفاعی کٹوتی کے اثرات کو نرم کر سکتا ہے، تاہم ہنگامی حالات میں جنگی اخراجات پر ان فوجی اخراجات کی کٹوتی کے اثرات نہیں پڑیں گے۔ سینیٹرز پہلے ہی مالی سال 2012ء کیلئے بنیادی دفاعی بجٹ کے دس ارب ڈالر کو جنگی بجٹ میں منتقل کر چکے ہیں۔ پینٹاگون حکام نے اس سلسلے میں کمیٹی کے کسی نتیجے پر نہ پہنچنے پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔ پینٹاگون پہلے ہی اضافی 500 سے 600 بلین ڈالر خودکار کمی کا سامنا کر رہا ہے۔ اگر دفاعی اخراجات میں کمی پر عمل شروع ہو جاتا ہے تو دفاعی تجزیہ کاروں کے نزدیک ہائی پروفائل ہتھیاروں کے پروگراموں کی ایک بڑی تعداد کو ختم کرنا پڑ سکتا ہے۔ لیون پنیٹا اشارہ دے چکے ہیں کہ پینٹاگون ایف 35جوائنٹ اسٹرائیک فائٹر، نیول پٹرول ائرکرافٹ اور جنگی جہازوں کی خریداری کے منصوبوں کو ترک کر دیں گے۔

Comments are closed.