عراق:سید عمار حکیم;لیبیا کے حکام سے کہا ہےکہ امام موسی صدر کے لاپتہ ہونے کے مسئلے کا سنجیدگي سے جائزہ لیاجائے

Posted: 28/10/2011 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Saudi Arab, Bahrain & Middle East, Tunis / Egypt / Yemen / Libya

عراق کی مجلس اعلائے اسلامی  کے سربراہ سید عمار حکیم نے لیبیا کے حکام سے کہا ہےکہ امام موسی صدر کے لاپتہ ہونے کے مسئلے کا سنجیدگي سے جائزہ لیاجائے۔ بغداد سے ہمارے نمائندے کی رپورٹ کے مطابق سید عمار حکیم نے لیبیاکےعوام کو قذافی کی حکومت کی سرنگونی کی مبارک باد دی اورلیبیا میں عوامی حکومت کی تشکیل کا خیرمقدم کیا۔سیدعمارحکیم نےاپنےبیان میں لیبیاکےحکام سےکہاکہ وہ امام موسی صدر کاپتہ لگائيں اور اس کےنتائج سے اس عظیم شخصیت کے عقیدت مندوں کو آگاہ کریں۔ سید عمار حکیم نے عراق کے مختلف صوبوں میں بعثیوں کی گرفتار کا خیرمقدم کرتےہوئےکہا کہ جن لوگوں کے ہاتھ بےگناہ عوام کے خون میں رنگے ہوئے ہیں انہیں عراق کی حکومت میں شامل ہونے کی اجازت نہ دی جائے ۔ سید عمار حکیم نے کہا کہ عراقی قوم کا اتحاد وہ واحد عامل ہے جس سے بیرونی مداخلت کا سد باب ہوسکتا ہے۔ سید عمار حکیم نے پی کے کے گروہ اور ترک فوج کے درمیان جھڑپوں کی طرف اشارہ کرتے ہوئے عراق سے تمام دہشتگرد گروہوں کے اخراج کی ضرورت پرتاکید کی ۔ انہوں نے کہا کہ عراق نہیں چاہتا کہ اس کی سرزمین پر دہشتگرد گروہ موجود رہیں۔

Comments are closed.