مالی مشکلات، وکی لیکس کی اشاعت بند

Posted: 26/10/2011 in All News, Breaking News, Important News, Survey / Research / Science News, USA & Europe

خفیہ راز افشاں کرنے والی ویب سائٹ وکی لیکس نے مالی مشکلات کے سبب خفیہ دستاویزات کی اشاعت فی الوقت روکنے کا فیصلہ کیا ہے۔وکی لیکس کا کہنا ہے کہ اس وقت وہ مستقبل میں اپنی بقاء کے لیے فنڈز جمع کرنے پر توجہ دیں گے۔ تنظیم کا کہنا ہے کہ امریکی مالی کمپنیوں کی طرف سے پابندیوں کے سبب وہ ایسا کرنے پر مجوبر ہیں۔ وکی لیکس کے بانی جولین اسانژ نے کہا ہے کہ گزشتہ دسمبر سے بینک آ‌ف امریکہ، ویزا، ماسٹر کارڈ، پے پال اور ویسٹرن یونین نے غیر قانونی طور پر مالی پابندیاں عائد کر رکھی ہیں۔ ان کا کہنا تھا’اس حملے نے ہماری آمدنی کے پچانوے فیصد حصے کو تباہ کر دیا ہے۔ جولین اشانژ کے مطابق تنظیم کو چلانے پر بہت زیادہ خرچ آتا ہے اور اس دوران لاکھوں ڈالر کا اسے نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے کہا’محض چند امریکی مالی کمپنیوں کو اس بات کی اجازت نہیں دی جانی چاہیے کہ پوری دنیا انہیں کی حمایت میں کھڑی ہو جائے۔ جولین اسانژ نے کہا کہ وکی لیکس کے لیے ضروری ہے کہ’وہ اپنے مخالفین اور ان پابندیوں کا مقابلہ کرنے کے لیے جارحانہ انداز سے فنڈز جمع کرنے میں لگ جائے۔ انہوں نے کہا ہے کہ وکی لیکس ان پابندیوں کے خلاف آئس لینڈ، ڈنمارک، برطانیہ، برسلز، امریکہ اور آ‎سٹریلیا میں پیشگي قانونی چارہ جوئی کر رہی ہے اور یورپی کمیشن میں بھی’اینٹی ٹرسٹ‘ شکایت درج کی گئي ہے۔ دنیا بھر میں امریکی سفارتی دستاویزات کو افشاء کرنے والی ویب سائٹ کے سربراہ جولین اسانژ سویڈن کواپنی حوالگی سے متعلق لندن کی ہائی کورٹ کے فیصلے کے منتظر ہیں۔ سوئیڈن نے اسانژ کی ملک بدری کی درخواست کی ہے جہاں ان پر جنسی حملے کرنے کا الزام ہے۔ تاہم جولین اسانژ کا کہنا ہے کہ وہ بے قصور ہیں اور ان کے خلاف یہ کیس سیاسی وجوہات کی بنا پر بنایا گیا ہے کیونکہ انہوں نے حساس نوعیت کی فوجی اور سفارتی دستاویزات کو اپنی ویب سائٹ کے ذریعے افشاء کیا ہے۔

Comments are closed.