عراق سے امریکی انخلاء، فائدہ ایران اٹھا سکتا ہے، امریکی اخبار

Posted: 26/10/2011 in All News, Important News, Iran / Iraq / Lebnan/ Syria, Survey / Research / Science News, USA & Europe

کراچی:  واشنگٹن پوسٹ کے مطابق ایسے وقت میں جب کہ ایران کے ساتھ امریکا کی خطے میں ایک سرد جنگ جاری ہے یہ تہران کے لیے میدان کھلا چھوڑ دینے کے مترادف ہوگا  امریکی اخبار واشنگٹن پوسٹ نے عراق سے امریکی فوج کی واپسی پر انتباہ کرتے ہوئے کہا ہے کہ اس صورتحال کا ایران بھرپور فائدہ اٹھا سکتا ہے۔ اپنی ایک رپورٹ میں اخبار لکھتا ہے کہ وائٹ ہاؤس کی یہ بات درست ہوسکتی ہے کہ عراقی وزیراعظم نوری المالکی کی حکومت اور اس کی مسلح افواج امریکی فوجیوں اور ان کی تربیت کے بغیر بھی اپنا کام چلا سکتی ہیں مگر ایسے میں جب کہ ایران کے ساتھ امریکا کی خطے میں ایک سرد جنگ جاری ہے یہ تہران کے لیے میدان کھلا چھوڑ دینے کے مترادف ہوگا۔ اخبار نے عراق میں طویل جنگ کے خاتمے کے اعلان اور اس کے بعد کے حالات کو اپنے اداریے کا موضوع بنایا ہے۔ واشنگٹن پوسٹ کے مطابق عراق میں جنگ صحیح معنوں میں صرف امریکی فوجیوں کے لیے ختم ہوگی کیونکہ عراقی باغی، جن میں القاعدہ بھی شامل ہے ملک کی نازک جمہوریت کے خلاف جنگ جاری رکھیں گے۔ اخبار کے خیال میں ایران اپنی ملیشیاؤں کی مدد جاری رکھے گا، ہزاروں نجی کنٹریکٹر امریکی سفارت کاروں اور تنصیبات کی حفاظت پر مامور رہیں گے اور شمالی عراق میں جہاں ترکی نے مسلح حملے کا آغاز کر دیا ہے نسلی کردوں اور عراقی حکومت کی فورسز کے درمیان تناؤ موجود رہے گا۔

Comments are closed.